سعودی عرب: 16 مساجد کی تعمیر ومرمت کے ٹھیکے منسوخ

اقدام تعمیراتی فریم ورک کی خلاف ورزی پرکیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارتِ مذہبی امور واوقاف نے دارالحکومت ریاض میں جامع مسجد الحریق اور القصیم کے مقام پر جامع مسجد ابوبکر صدیق کی دوبارہ تعمیر کے دو پروجیکٹ متعلقہ تعمیراتی فرموں سے واپس لے لیے ہیں۔ جس کے بعد رواں سال تعمیراتی فریم ورک کی خلاف ورزی اور وقتِ مقررہ پر منصوبے مکمل نہ کرنے والی کمپنیوں سے مساجد کی تعمیرو مرمت کے واپس لیے گئے پروجیکٹ کی تعداد 16 ہو گئی ہے۔

وزارت مذہبی امور اور دعوت ارشاد کے سیکرٹری برائے انتظامی امورعبداللہ الھویمل نے بتایا کہ جامع مسجد الحریق اور جامع ابوبکر صدیق کے تعمیراتی کام روکنے کا فیصلہ متعلقہ اداروں کی ناکامی کے باعث کیا گیا ہے۔ دونوں مساجد کی تکمیل کے لیے ٹینڈرکی شرائط کے مطابق جومدت مقررکی گئی تھی، یہ کمپنیاں اس شیڈول کے مطابق کام نہیں کرسکی ہیں، جس کے باعث یہ پروجیکٹ ان سے واپس لے لیے گئے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ رواں سال وزارت مذہبی امورنے مساجد کی تعمیر کے لیے مقررکردہ فریم ورک کی خلاف ورزی کرنے والے تعمیراتی اداروں سے مجموعی طور پر سولہ پروجیکٹ واپس لیے ہیں۔ عبداللہ الھویمل نے ملک میں اللہ کے گھروں کی تعمیرکرنے والی تعمیراتی فرموں پر زور دیا کہ وہ منصوبے مقررہ وقت اور شرائط و ضوابط کے مطابق مکمل کریں۔ بروقت منصوبے مکمل نہ کرپانے والی فرموں کو بلیک لسٹ کرنے کی دھمکی دی۔

خیال رہے کہ سعودی وزیر مذہبی امور نے حال ہی میں متعلقہ حکام کو ہدایت کی تھی کہ وہ مملکت میں مساجد کی تعمیرو مرمت اور ان کی صفائی کے انتظامات کی خصوصی نگرانی کریں اور کوتاہی برتنے والے اداروں کے خلاف محکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں