عراق: تشدد پراکسانے میں معاون 50 ہزار کھلونے تلف

ممنوعہ کھلونوں کے کاروباری کو قید اور جرمانہ کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شورش زدہ عراق میں حکومت شدت پسندی اور دہشت گردی کوختم تو نہیں کر سکی ہے تاہم بچوں کے اسلحہ کی شکل کے کھلونوں کی تلفی کی ایک تازہ مہم شروع کی گئی ہے۔ اس مہم میں بندوقوں، پستول، گرنیڈ اور دستی بموں کی شکل کے 50 ہزار کھلونوں پر رولر چڑھا کر ان کا کچومر نکال دیا گیا۔ حکومت کا دعویٰ ہے کہ اسلحہ کی شکل کے یہ کھلونے بچوں کو شدت پسندی اور دہشت گردی کی طرف مائل کر رہے ہیں۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی"اے ایف پی" کے مطابق وزارت اقتصادیات کے زیر انتظام محکمہ انسداد برائے تجارتی جرائم کی جانب سے ہزاروں کی تعداد میں بچوں کے کھلونے دکانوں سے نکال کر بغداد میں میں ایک گراؤنڈ میں پھینکے گئے۔ بعد ازاں ان پر بھاری مشینیں چڑھا کر انہیں تلف کر دیا گیا۔

قبل ازیں عراقی اراکین پارلیمنٹ نے ایک بل بھی منظور کیا ہے جس میں بچوں کو تشدد پراکسانے والے کھلونوں کی درآمدات و برآمدات پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ پارلیمنٹ کے منظورکردہ مسودہ قانون کے تحت خلاف قانون کھلونوں کی تجارت کرنے والے شخص کو تین سال قید اور آٹھ ہزار ڈالر جرمانہ کی سزا ہو سکتی ہے۔

خیال رہے کہ پلاسٹک کے بنے ان کھلونوں کی تلفی کی یہ پہلی مہم ہے جس کا تجربہ عراق میں کیا گیا ہے۔ کھلونا نما اسلحے کی بھرمار کے نتیجے میں بڑی تعداد میں بچے زخمی بھی ہوچکے ہیں۔ عیدین اور دیگر تہواروں کے موقع پر بچوں کے پاس ایسے غیر مہلک کھلونوں کی بڑی تعداد دیکھی جاتی ہے۔

عراقی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کھلونا بندوقوں سے کھیلتے ہوئے گذشتہ عید الفطرپر ملک بھرمیں کم سےکم پانچ سو بچے زخمی ہوچکے ہیں، حالیہ عید الاضحیٰ کے موقع پر بھی ایسے واقعات پیش آئے ہیں تاہم وہ نسبتا کم تعداد میں ہیں۔

اھرعراقی وزارت تجارت کے محکمہ انسداد جرائم کے ایک عہدیدار نے"اے ایف پی"کو بتایا کہ کھلونا بندوقیں، ہینڈ گرنیڈ اور اس نوعیت کی دیگر اشیاء نہ صرف تشدد پر اکساتی ہیں بلکہ بچوں کے لیے خطرناک بھی ثابت ہو رہی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ حکومت ایسے کھلونوں کی ضبطی اور تلفی کی مہم شروع کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عراق کے بعض تاجرچینی کارخانہ داروں سے خصوصی آرڈر پر مال تیار کرانے کے بعد منگواتے رہے ہیں۔ چین میں اس نوعیت کے کھلونوں پر پابندی ہے مگر چینی فیکٹریوں میں اس نوعیت کا سامان رات کے اوقات میں چوری چھپے ہوتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں