پاکستان میں پولیو کے شکار بچوں کے لیے شاہ عبداللہ کی خصوصی امداد

تعاون عالمی ادارہ صحت کی اپیل کے جواب میں پیش کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز آل سعود نے عالمی ادارہ صحت کی جانب سے تعاون کے لیے پیش کردہ اپیل کے جواب میں پاکستان کے اندر پولیو سے معذور بچوں کی خصوصی امدادی مہم میں بھرپور شمولیت کی ہدایت کی ہے۔

سعودی وزیر صحت ڈاکٹرعبداللہ بن عبدالعزیز الربیعہ نے سلطنت عمان میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں پولیو سے معذور ہونے والے بچوں کی خصوصی امدادی مہم کے لیے شاہ عبداللہ نے بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی ہدایت کی ہے۔ تعاون کے لیے یہ درخواست عالمی ادارہ صحت کی جانب سے سعودی عرب اور کئی دوسرے ممالک سے کی گئی تھی۔

ڈاکٹرعبداللہ الربیعہ نے کہا کہ ان کی حکومت مشرق وسطیٰ اور خلیجی ممالک میں بھی پولیو سے معذور ہونے والے افراد کی امداد اور علاج کے لیے ہر ممکن تعاون کر رہی ہے۔ پاکستان میں اس اس مرض پر قابو پانے کے لیے نقد رقوم کی شکل میں امداد کے ساتھ ساتھ الحرمین الشریفین کے آئمہ کے ذریعے بھی اپیل کرائی جائے گی۔

ادھر مشرق وسطیٰ ریجن کے لیے عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر ڈاکٹر علاء علوان نے اپنے ایک بیان میں شاہ عبداللہ کی جانب سے خطے میں پولیو سے معذور بچوں کے لیے خصوصی امداد کی ہدایات جاری کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مشرق وسطیٰ کے خطے میں بھی پولیو کی بیماری عام ہے اور عالمی ادارہ صحت اس پر قابو پانے کے لیے سر توڑ مساعی جاری رکھے ہوئے ہے۔ پولیو کی روک تھام کے لیے امداد کی فراہمی تمام مسلمان ملکوں کی ذمہ داری ہے۔ سعودی عرب کی جانب سے پہل ایک اچھی مثال ہے مگر اسے کوئی انوکھا اقدام نہیں قرار دے سکتے۔

ڈاکٹر علاء علوان نے کہا کہ سعودی عرب کی جانب سے ملنے والی امداد سے پاکستان میں پولیو کے مریض بچوں کی صحت کی بحالی میں مدد ملنے کے ساتھ اس بیماری کے خاتمے کے لیے ہمارے پروگرام کو آگے بڑھانے میں بھی مدد ملے گی۔ اس امداد سے پولیو کے باعث زندگی اور موت کے کشمکش میں متبلا بچوں کی زندگیاں بچانے میں بھی مدد ملے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں