لیبیا:ساحلی محافظوں نے 84 تارکین وطن کو ڈوبنے سے بچا لیا

ممکنہ طور پر یورپ جانے والے غیرقانونی تارکین وطن کی کشتی سمندر میں ٹوٹ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کے ساحلی محافظوں نے افریقہ سے تعلق رکھنے والے چوراسی غیر قانونی تارکین وطن کو طرابلس کے نزدیک سمندر میں ڈوبنے سے بچالیا ہے۔

لیبیا کے میری ٹائم حکام نے بتایا ہے کہ ''طرابلس کے شمال میں سمندر میں مختلف افریقی ممالک سے تعلق رکھنے والے غیرقانونی تارکین وطن کی کشتی ٹوٹ کر حادثے کا شکار ہوگئی جس کے بعد لیبیا کے ساحلی محافظوں نے بحریہ کے خصوصی دستوں کی مدد سے انھیں بحفاظت سمندر سے نکال لیا ہے''۔

انھوں نے بتایا کہ تمام تارکین وطن کی صحت بہتر ہے اور انھیں مغربی بندرگاہ زاویہ منتقل کردیا گیا ہے۔وہاں انھیں غیر قانونی تارکین وطن سے نمٹنے کی ذمے دارایجنسی کے حوالے کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ منگل کو سب صحارا افریقہ سے تعلق رکھنے والے قریباً ایک سو تارکین وطن لیبیا کے جنوب مغرب میں واقع قصبے غاریان کے ایک حراستی مرکز سے بھاگ جانے میں کامیاب ہوگئے تھے۔ان میں سے پچھہتر کو بعد میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔

لیبیا کی ساحلی پٹی 1770 کلومیٹر طویل ہے۔اس کو جنوبی اور مغربی افریقہ سے تعلق رکھنے والے غیرقانونی تارکین یورپ تک پہنچنے کے لیے بہتر سمندری راستہ خیال کرتے ہیں لیکن ان کا یہ سفر بہت کٹھن ہوتا ہے۔بحرقلزم کے راستے یورپ تک پہنچتے سیکڑوں افریقی سمندی لہروں کی نذرہوجاتے ہیں۔صرف اس ماہ بہتر زندگی کی تلاش میں یورپ جانے والے سیکڑوں افریقی مارے گئے ہیں جبکہ سیکڑوں کو بچا لیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں