.

بشارالاسد کا مستقبل میں کوئی کردار نہیں ہونا چاہیے: سعود الفیصل

شام میں متشدد انتہا پسند زور پکڑ رہے ہیں، انھیں روکا جانا چاہیے: جان کیری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا اور سعودی عرب نے اس بات سے اتفاق کیا ہے کہ شام میں عبوری دور کے لیے نئی حکومت میں صدر بشار الاسد کا کوئی کردار نہیں ہونا چاہیے۔

امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے سوموار کو اپنے سعودی ہم منصب شہزادہ سعود الفیصل کے ساتھ ریاض میں مشترکہ نیوزکانفرنس کے دوران کہا کہ ''شام میں مقاصد کے حوالے سے ہمارے سعودی عرب کے ساتھ کوئی اختلافات نہیں ہیں''۔

انھوں نے کہا کہ ''بشارالاسد اب حکمرانی کا ہرجواز کھوچکے ہیں،انھیں جانا ہوگا''۔انھوں نے شام میں قیام امن کے لیے سعودی عرب کے عزم کو سراہا۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ شام میں جاری بحران فوجی قوت کے استعمال سے ختم نہیں ہوگا۔

جان کیری نے شامی حزب اختلاف کے لیے واشنگٹن کی حمایت کا اعادہ کیا اور خبردار کیا کہ شام میں متشدد انتہا پسند زور پکڑ رہے ہیں،انھیں روکا جانا چاہیے۔تاہم ان کا کہنا تھا کہ امریکا خاموش نہیں بیٹھا رہے گا لیکن اس کی انھوں نے وضاحت نہیں کی کہ شام کے خلاف فوجی کارروائی کا موقع کھوجانے کے بعد اب امریکا کیا اقدام کرے گا یا کرسکتا ہے۔

اس موقع پر سعودی وزیرخارجہ شہزادہ سعود الفیصل نے کہا کہ ''ان کے ملک اور واشنگٹن کے درمیان مقاصد کے بجائے طریق کار پراختلافات ہیں۔امریکا اورسعودی عرب کے تعلقات ہمیشہ آزادی ،احترام اور باہمی مفادات کی بنیاد پر قائم رہے ہیں''۔

ان کا کہنا تھا کہ دوطرفہ اختلافات ایک معمول کا معاملہ ہیں اور ہم دوطرفہ ابلاغ کے ذریعے ان پر قابو پالیں گے۔شام کے حوالے سے سعودی وزیرخارجہ نے کہا کہ عالمی برداری اس ملک میں خونریزی رکوانے میں ناکام رہی ہے۔بحران کے حل کے لیے مذاکرات اہم ہیں لیکن یہ غیر معینہ مدت کے لیے جاری نہیں رہنے چاہئیں۔

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ''اقوام متحدہ کے معائنہ کارشام میں کیمیائی ہتھیاروں کی جگہوں کو تو تباہ کررہے ہیں لیکن اس سے اس ملک میں تباہ کن تشدد کا خاتمہ نہیں ہوا ہے''۔

واضح رہے کہ جان کیری نے گذشتہ روز قاہرہ میں بھی نیوزکانفرنس میں کہا تھا کہ ''صدربشارالاسد حکمرانی کا اخلاقی جواز کھوچکے ہیں اور شام میں ایک عبوری حکومت کے قیام کی ضرورت ہے لیکن بشارالاسد اس حکومت کا حصہ نہیں بن سکتے اور کوئی بھی اس سوال کا جواب نہیں دے سکتا کہ ان کے ہوتے ہوئے اس جنگ کا کیسے خاتمہ ہوسکتا ہے''۔