.

سعودی عرب میں غیر قانونی مقیم آٹھ ہزارغیر ملکی گرفتار

غیر قانونی تارکین وطن کی یمن فرار کی کوشش ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی پولیس نے ملک میں موجود غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف کریک ڈاؤن میں کم سے کم آٹھ ہزار افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔ ادھر یمن کی سرحد سے متصل الطوالہ بارڈر چوکی سے سیکڑوں غیر قانونی تارکین وطن نے فرار کی کوشش کی جسے پولیس نے بر وقت کارروائی کرکے ناکام بنا دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی پولیس کے ایک سینیرعہدیدار نے بتایا ہے کہ ملک کے جنوبی شہر جازان میں غیر ملکی تارکین وطن کو دوسرے ملکوں میں ڈیپورٹ کرنے کے لیے قانونی کارروائی جاری تھی کہ حراست میں رکھے گئے درجنوں افراد نے بارڈ چوکی کی دیواریں پھلانگ کر یمن کی جانب فرار کی کوشش کی۔ فرار کی ناکام کوشش کرنے والوں میں ایسے افراد بھی شامل تھے جو سعودی عرب کی عدالتوں سے مختلف جرائم میں اشتہاری قرار دیے جا چکے ہیں۔

پولیس افسرنے بتایا کہ کوئی غیر ملکی الطوالہ گذرگاہ سے فرار نہیں ہوا ہے۔ فرار کی کوشش کرنے والے تمام افراد کو دوبارہ پکڑ لیا گیا ہے اور بارڈر فورسز نے گڑ بڑ کی کوشش پرمکمل طور پر قابو پا لیا ہے۔

سعودی عہدیدار نے بتایا کہ غیر قانونی قیام پذیرغیر ملکی شہریوں میں سے تین ہزار کو ان کے ملکوں کے حوالے کرنے کے لیے تمام قانونی تقاضے پورے کر لیے گئے ہیں انہیں اگلے چوبیس گھنٹوں میں ان کے متعلقہ ملکوں کو ڈیپورٹ کر دیا جائے گا۔ دیگرپانچ ہزار افراد کے فنگر پرنٹس لیے جا رہے ہیں۔

قبل ازیں اطلاعات آئی تھیں کہ سعودی پولیس نے 4965 غیر قانونی تارکین وطن حراست میں لے لیا۔ ان میں صرف جدہ شہر سے پکڑے جانے والوں کی تعداد 3918 بتائی گئی تھی۔