.

سعودی پولیس اور ایتھوپیائی تارکین وطن میں تصادم، متعدد افراد زخمی

غیر ملکیوں کی پولیس پر چاقوؤں سے حملے کی کوشش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں غیر قانونی تارکین وطن کی تلاش کے لیے جاری آپریشن کے دوران ایتھوپیائی باشندوں نے قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں پر حملہ کر کے بدنظمی پھیلانے کی کوشش کی تاہم پولیس نے بروقت کارروائی کر کے گڑ بڑ پھیلانے کی سازش ناکام بنا دی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق پولیس معمول کے مطابق دارالحکومت ریاض کی مختلف کالونیوں میں غیر ملکیوں کے خلاف سرچ آپریشن جاری رکھے ہوئے تھی۔ ایتھوپیائی تارکین وطن کی اکثریت والی "المنفوحہ" کالونی میں تلاشی کی کارروائی کے دوران چھریاں، چاقو اور تیز دھار دستی اوزار ہاتھوں میں لیے غیر ملکی گھروں سے باہر نکل آئے۔ انہوں نے پولیس اہلکاروں پر حملے کی کوشش کی، تاہم اسے ناکام بنا دیا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ "المنفوحہ" کالونی میں قیام پذیر بیشتر غیر ملکی جن میں ایتھوپیائی باشندوں کی اکثریت شامل ہے بغیر کسی کفیل ہے رہ رہے ہیں۔ ان میں سے بیشتر کے پاس سعودی عرب میں قیام کے لیے ویزہ اور دیگر کوائف نہیں ہیں۔ اس کے باوجود انہوں نے طاقت کے ذریعے پولیس کارروائی ناکام بنانے کی کوشش کی ہے۔ پولیس کے ساتھ تصادم میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں جبکہ درجنوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ریاض پولیس کے ترجمان کرنل ناصر القحطانی نے اپنے ایک بیان میں بتایا کہ ہفتے کے روز پولیس نے المنفوحہ کالونی میں ایتھوپیائی غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا۔ پولیس کی جانب سے پہلے غیرملکیوں کو کہا گیا کہ وہ اپنے خاندانوں سمیت خود کو حکام کے حوالے کر دیں ورنہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کو گھروں پر چھاپے مارنا پڑیں گے۔ اس کے ردعمل میں غیرملکیوں نے دستی ہتھیاروں سے پولیس پرحملے کی کوشش کی۔ تاہم پولیس نے نظم وضبط کا مظاہرہ کرتے ہوئے حالات کو قابو میں کرلیا۔