.

ایران ایئر لائن کے ہیڈ کواٹرز کی چھت سے 'نجمہ داود' ہٹا دیا گیا

"گوگل اِرتھ" کے نئے نقشے میں یہودی علامت دکھائی نہیں دیتی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق سرکاری ایئرلائن کمپنی کے مہرآباد ہوآئی اڈے کے قریب بنائے گئے ہیڈ کواٹرز کی چھت سے یہودیوں کی مذہبی علامت "ستارہ داؤدی" کی متنازعہ تصویر ختم کر دی گئی ہے۔ اس تصویر کا انکشاف گذشتہ برس "گوگل ارتھ" پر جاری کیے گئے نقشے میں کیا گیا تھا۔

فارسی نیوز ویب پورٹل "تابناک" کی رپورٹ کے مطابق "گوگل ارتھ" کے نئے نقشے میں ایران ائیر لائن کے ہیڈ کواٹرز کی چھت پر اب "ستارہ داؤدی" کی تصویر موجود نہیں۔ تاہم یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ ایران میں اس تصویر کے سامنے آنے کے بعد پیدا ہونے والے تنازع کو ختم کرنے کے لیے گوگل ارتھ نے اپنے نقشے میں وہ تصویر نہیں دی یا ایران ایئر لائن کی جانب سے اسے مٹا دیا گیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ایران ایئر لائن کی یہ مرکزی بلڈنگ ایرانی بادشاہ ظاہر شاہ کے دور میں بنائی گئی تھی جس کی تعمیر میں اسرائیلی انجینئروں کی خدمات بھی لی گئی تھیں۔

ایک دوسری نیوز ویب سائٹ "کویا نیوز" کے مطابق سنہ 1979ء میں ایران میں برپا ہونے والے اسلامی انقلاب سے قبل اسرائیل اور ظاہر شاہ کے درمیان گہرے مراسم تھے۔ بادشاہ سلامت نے ملک میں تعمیر و ترقی کے کئی منصوبوں پر اسرائیلی ماہرین کو کام سونپ رکھا تھا۔ ایران میں کام کے دوران اسرائیلی ماہرین اورانجنیئر کئی مقامات پر یہودی علامات بھی بناتے رہتے تھے۔

ایران ایئر لائن کی مرکزی عمارت بھی اسرائیلیوں ہی نے تعمیر کی تھی اور جاتے وقت انہوں نے اس کی چھت پر یہودیوں کی مذہبی علامت "ستارہ داؤدی" کی ایک بڑی تصویر بنا دی تھی۔ ما بعد انقلاب اسرائیل کے ساتھ سخت مخالفت کے علی الرغم یہ تصویر اپنی جگہ موجود رہی تاہم اب اسے غائب کر دیا گیا ہے۔ ایران کے کئی دوسرے اداروں میں یہودیوں کی علامتیں موجود تھیں جنہیں ما بعد انقلاب مٹایا جاتا رہا ہے۔