سوڈان حکومت اور باغی پولیو مہم روکنے پر متفق

سوڈان نے پہلے اقوام متحدہ کی پولیو ٹیموں کیلیے اجازت پر اتفاق کیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سوڈان کی حکومت اور باغی گروپوں نے اقوام متحدہ کے پولیو ورکرز کو سوڈان کی بد امنی کی شکار ریاسستوں میں بچوں کو پولیو ویکسینیشن دینے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے۔

اقوام متحدہ کے انسانی بھلائی کے شعبے کے ذمہ دار جان گنگ نے کہا '' اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل پر دباو ہے کہ ''فلیبسٹر'' کو روکا جائے۔'' ان کا کہنا ہے کہ '' سوڈانی حکومت اور سوڈان پیپلز لبریشن موومنٹ کی طرف سے ہے۔''

اقوام متحدہ کی متعلقہ ٹیم کو مذکورہ علاقوں میں حکومت سوڈان کی طرف سے اس سے قبل دی گئی اجازت کے باوجود اب روک دیا گیا ہے۔

واضح رہے مشرقی افریقہ میں پولیو کے پھوٹنے کی اطلاعات ہیں، جس کی وجہ سے اقوام متحدہ میں پریشانی پائی جاتی ہے کہ سوڈان میں جاری تصادم کی وجہ سے یہ عارضہ دوبارہ پھیل سکتا ہے۔

سوڈان کی دو ریاستوں میں باغِی 2011 سے لڑ رہے ہیں۔ لیکن دلچسپ بات ہے کہ متحارب فریقین پولیو ویکسینیشن کو روکنے پر متفق ہیں۔ اس وجہ سے اقوام متحدہ کی پولیو ٹیموں کو ان ریاستوں میں جانے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے۔

اس بارے میں پندرہ رکنی سلامتی کونسل نے ماہ اپریل میں ایک قرارداد میں بھی ان تشدد زدہ ریاستوں میں پولیو ٹیموں کو جانے کی اجازت دینے پر زور دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں