.

سعودی عرب عالمی فیڈریشن آف ریڈ کراس، ریڈ کریسنٹ کا رکن منتخب

ریاض کی دکھی انسانیت کے لیے خدمات کا عالمی سطح پر اعتراف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ادارہ ہلال احمر کو انٹرنیشنل فیڈریشن آف ریڈ کراس اور ریڈ کریسنٹ کا چار سال کے لیے رکن منتخب کیا گیا ہے۔ ریاض فیڈریشن میں ایشائی ملکوں کی نمائندگی کرے گا۔

فیڈریشن کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں ہونے والے ادارے کے اجلاس میں یہ چناو عمل میں لایا۔ اجلاس میں 189 رکن ممالک کے مندوبین نے شرکت کی۔ اجلاس میں سعودی عرب کوعالمی ریڈ کریسنٹ اورریڈ کراس کا چار سال کے لیے ممبرمنتخب کرنےکے لیے رائے شماری کی گئی۔ رائے شماری کے دوران غیرمعمولی اکثریت نے سعودی عرب کے حق میں ووٹ ڈالا۔ ریاض کی حمایت میں مجموعی طورپر 189 کے ایوان میں 185 رکن ملکوں نے ووٹ ڈالے گئے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب کوعالمی امدادی اداروں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں چارسال کی رکنیت ملنے کے بعد ہلال احمر کے ڈائریکٹر برائے عالمی امور شہزادہ عبداللہ فیصل نے اسے ایک اہم اعزاز قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ ریڈ کراس اور ریڈ کریسٹ میں سعودی عرب کی رکنیت دراصل ریاض کی عالمی اور علاقائی سطح پرریلیف سرگرمیوں کا ایک ایوارڈ ہے۔ سعودی عرب مصیبت زدگان کی مدد میں نہ صرف خطے کا ایک اہم ڈونر ملک سمجھا جاتا ہے بلکہ ریاض کی فلاحی اور امدادی خدمات کوعالمی سطح پرتحسین کی نظر سے دیکھا جاتا ہے۔

درایں اثناء آسٹریلیا میں سعودی عرب کے سفیر نبیل آل صالح نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ عالمی امدادی اداروں کی انتظامیہ میں ان کے ملک کوجگہ ملنا باعث فخر ہے۔ ریڈ کریسنٹ اور ریڈ کراس کی رکنیت درحقیقت خادم الحرمین الشریفین کی دُکھی انسانوں کی خدمت کا اعتراف ہے۔ دونوں بڑے عالمی اداروں کے بورڈ آف ڈائریکٹرمیں شامل ہونے کے بعداب ثابت ہو گیا ہے کہ سعودی عرب کی خدمات کو عالمی سطح پر کس قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔

واضح رہے کی ریڈ کراس اور ریڈ کریسنٹ کے گذشتہ روز ہوئے اجلاس میں جاپان سے تعلق رکھنے والے ٹڈا ٹیروی کونوی کو مزید چار سال کے لیے ادارے کا چئیرمین مقررکیا گیا ہے۔ ان کا مقابلہ وینزویلا کے ماریو ویلا کے ساتھ تھا۔ اجلاس میں چار نائب صدرو بھی منتخب کیے گئے۔