.

ریاض میں طوفانی بارش کے بعد ہائی الرٹ،تین افراد لاپتا

سعودی دارالحکومت میں کاروبار زندگی معطل،ساحلی علاقوں میں بارش کی پیشین گوئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں طوفانی بارش کے بعد سڑکیں زیرآب آگئی ہیں،روزمرہ معمولات زندگی معطل ہوگئے ہیں اور تین افراد لاپتا ہیں۔

ریاض میں ہفتے کے روز سے جاری طوفانی بارش کے نتیجے میں نشیبی علاقے بارش میں ڈوبے ہوئے ہیں۔حکام نے شہریوں کے تحفظ اور انفراسٹرکچر کو نقصان سے بچانے کے لیے ہنگامی اقدامات کیے ہیں۔محکمہ شہری دفاع کے اہلکاروں نے شہر بھر میں امدادی کارروائیوں کے دوران چوبیس شہریوں کو موت کے منہ میں جانے سے بچا لیا ہے۔یہ شہری سیلابی ریلا آنے کے بعد اپنی گاڑیوں میں پھںس کر رہ گئے تھے۔

سعودی دارالحکومت میں گذشتہ تیس سال کے بعد یہ سب سے زیادہ بارش ہے۔ حکام نے شہریوں کو اپنے گھروں ہی میں رہنے کی ہدایت کی ہے اور وزارت تعلیم نے اتوار کو ریاض میں اسکولوں اور جامعات میں تدریسی سرگرمیان معطل کردی ہیں۔

ہفتے اور اتوار کو سعودی عرب کی چار اور گورنریوں مرات ،ژادج ،دریا اور المجمع میں بھی شدید بارش ہوئی ہے۔گذشتہ روز صوبے البھا ،جیزان شہر اور دو گورنریوں سبیہ اور الایدابی میں بارش کی اطلاعات ملی تھیں۔

محکمہ موسمیات کے ماہرین کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کے وسطی اور مشرقی علاقوں اور بعض دوسری خلیجی ریاستوں میں بارشوں کا سلسلہ جمعرات تک جاری رہے گا۔سعودی عرب کے شہر خفجی اور دمام کے درمیان واقع ساحلی علاقوں میں سوموار اور منگل کو شدید بارش ہونے کی پیشین گوئی کی گئی ہے اور ان علاقوں میں ایک سو ملی میٹر تک بارش متوقع ہے۔