.

سعودی عرب سے ٹی وی چینلز کو نشریات پیش کرنے کی اجازت

میڈیا پلیٹ فارم سے ابلاغی شعبے میں سرمایہ کاری کی پیشکش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے محکمہ اطلاعات ونشریات نے ملک میں میڈیا پلیٹ فارم کے توسط سے ابلاغی شعبے میں سرمایہ کاری کرنے اور نشریاتی اداروں کو اپنی نشرتیات مملکت سے فراہم کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

سعودی محکمہ اطلاعات ونشریات کے چیئرمین ڈاکٹر ریاض بن کمال نجم نے صحافیوں کو بتایا کہ کابینہ کےایک اعلی اختیاراتی سطح کے اجلاس میں وزارت اطلاعات کوملک میں میڈیا فورم کے قیام اور اس کے توسط سے نشریاتی خدمات کی فراہمی کے لیے تمام ضروری انتظامات کی ہدایت کی گئی ہے، جس کے بعد سعودی نشریاتی ادارے اپنی سرزمین سے نشریاتی پیش کرسکیں گے۔

اس سلسلے میں ماہرین پرمشتمل ایک کمیٹی بھی تشکیل دے دی گئی ہے، جو سعودی ٹیلی ویژن چینلوں کی اندرون ملک سے نشریات شروع کرنے کے لیے لائحہ عمل مرتب کرے گی۔ یہ کمیٹی اس امرکا جائزہ بھی لے گی کہ آیا ملکی نشریاتی اداروں کی نشریات کے ذریعے سرمایہ کاری کے کتنے امکانات اور مواقع موجود ہیں۔

ڈاکٹر ریاض نجم نے بتایا کہ حکومت تمام ٹیلی ویژن چینلوں کو اندرون ملک سے اپنی سروسز شروع کرنے کے لیے مکمل آزاد ماحول فراہم کرنا چاہتی ہے۔ ٹیلی ویژن چینلوں کو نیوز پروڈکشن، خبروں کی فراہمی اور ان کی نشریات کی سیٹلائیٹ تک رسائی سمیت ہرممکن سہولت فراہم کی جائے گی۔ابتدائی طور پر یہ سہولت سعودی شہریوں کے ملکیتی نشریاتی اداروں [ریڈیواور ٹیلی ویژن] کو دی جائے گی۔

ایک سوال کے جواب میں سعودی عہدیدارنے کہا کہ حکومت کواندازہ ہے کہ ہمارے ملکی ٹیلی ویژن چینلوں کو بیرون ملک سے نشریات پیش کرنے پر بھاری اخراجات اٹھانا پڑتے ہیں۔ ریاض حکومت میڈیا پلیٹ فارم کے ذریعے مناسب قیمت پر یہ سہولت انہیں اپنے وطن ہی میں فراہم کرے گی۔