ڈیم کی تصویریں اتارنے والا سعودی نوجوان پانی میں ڈوب کر جاں بحق

واقعہ ملک کے جنوبی ضلع بلجرشی میں پیش آیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے جنوبی ضلع بلشجری میں ایک ڈیم کی تصویریں اتارتے ہوئے نوجوان پانی میں ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب علاقے میں شدید بارشوں کے بعد ایک نوجوان ڈیم کی دیوار پر کھڑے ہو کر اپنے موبائل کیمرے کی مدد سے پانی کے مناظر کی تصاویر اتار رہا تھا کہ توازن بگڑنے کے باعث تین میٹر گہرے پانی میں جا گرا، جس کے نتیجے میں اس کی موت واقع ہو گئی۔

سعودی شہری دفاع کے ترجمان کیپٹن جمعان الغامدی نے بتایا کہ انہیں اطلاع ملی تھی کہ جنوبی ضلع بلجرشی کے" الجنابین" ڈیم کی تصویں اتارتے ایک شخص پانی میں ڈوب گیا ہے۔ اطلاع ملتے ہی امدادی ٹیمیں اور غوطہ خور جائے حادثہ کی جانب روانہ کردیے گئے تھے۔ امدادی کارکنوں نے نواجوان کو نیم مردہ حالت میں پانی سے نکالا لیکن اسپتال پہنچنے سے قبل ہی وہ دم توڑ گیا۔

کپیٹن الغامدی نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا کہ ایک تئیس سالہ لڑکا اپنے موبائل فون کے کیمرے سے ڈیم کی تصویرں اتار رہا تھا۔ اچانک پاؤں پھسلنے اور جسمانی توازن پر قابو نہ رکھ پانے پر وہ قریبا تین میٹر گہرے پانی میں جا گرا۔ موقع پر موجود شہریوں نے بھی اسے بچانے کی مقدور بھر کوشش کی لیکن پانی میں گہرا ہونے کے باعث وہ اسے نہیں بچا سکے ہیں۔

انہوں نے شہریوں پر زور دیاکہ وہ ڈیم اور تیز رفتار پانی کی نہروں کے قریب کھڑے ہونے یا بیٹھنے سے سختی گریز کریں تاکہ حادثات سے بچا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں