.

موریتانیہ میں عام انتخابات کے لیے پولنگ جاری، اپوزیشن کا بائیکاٹ

حکمراں جماعت کا الیکشن کمیشن پردھاندلی کرانے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افریقی ملک موریتانیہ میں سات سال بعد پارلیمانی اور بلدیاتی انتخابات کے لیے پولنگ آج ہفتے کو ایک ساتھ ہو رہے ہیں۔ انتخابات میں مجموعی طور پر 60 سیاسی جماعتوں کے امیدوار حصہ لے رہے ہیں جبکہ اپوزیشن کے ایک درجن جماعتوں پر مشتمل اتحاد نے الیکشن کا بائیکاٹ کر رکھا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق موریتانیہ میں عام انتخابات کے لیے پولنگ کا آغاز مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے ہوا۔ ملک کے مختلف شہروں میں پولنگ مراکز کے علاوہ اولمپک اسٹیڈیم میں سب سے بڑا پولنگ سینٹر قائم کیا گیا ہے جہاں بڑی تعداد میں شہری ووٹ ڈالنے آ رہے ہیں۔ وہیں پر انتخابات کی نگرانی کرنے والے مبصرین اور میڈیا کے نمائندے بھی موجود ہیں۔

موریتانیہ کے 147 رکنی پارلیمان کے چناؤ کے لیے مجموعی طور پر 12 لاکھ رجسٹرڈ ووٹر اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے۔ بلدیاتی انتخابات کے لیے ملک کو 218 شہری اور دیہی کونسلوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ فوج کے اداروں اور کنٹونمنٹ بورڈ میں پولنگ کل جمعہ کے روز ہو چکی تھی تاہم گنتی کا عمل آج کی پولنگ مکمل ہونے کے بعد کیا جائے گا۔

درایں اثناء حکمراں جماعت یونین پارٹی برائے جمہوریت نے الیکشن کمیشن پر کڑی تنقید کرتے ہوئے دھاندلی کرانے کا الزام عائد کیا ہے۔ یونین پارٹی کا کہنا ہے کہ انہیں شکایت ملی ہے کہ الیکشن کمیشن نے کئی بیلٹ پیروں پر جماعت کے انتخابی نشانات شائع نہیں کیے ہیں جس سے انتخابات کی شفافیت کو نقصان پہنچا ہے۔

انتخابات میں اپوزیشن کی گیارہ جماعتوں کے اتحاد نے صدر اور حکومت کی پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے پولنگ کا بائیکاٹ کر رکھا ہے۔