.

چین کی نئی فضائی حد بندی، خطے میں تشویش ہے: جو بائیڈن

امریکا ایشیا میں فوجی اور اقتصادی طاقت کے طور پر موجود رہے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے نائب صدر جو بائیڈن نے چین کی طرف سے اپنے مشرقی سمندر پر نئی فضائِی حدبندیوں کے اعلان نے خطے میں تشویش پیدا کر دی ہے۔ امریکی نائب صدر اس بارے میں بیجنگ میں بات کرتے ہوئے بڑے یکسو نظر آئَے۔

امریکی نائب صدر نے اس امر کا اظہار بیجنگ میں امریکی کاروباری حضرات سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے۔ جو بائیڈن کا کہنا تھا '' اس خطے میں امریکا کے مفادات گہرے ہیں، حقیقت یہ ہے کہ امریکا ایشیا میں ایک فوجی اور اقتصادی قوت کے طور پر رہے گا۔''

انہوں نے کہا چین کی طرف سے ایک ایسے علاقے میں نئی حدبندی کی گئی ہے جس میں متنازعہ جزیرہ بھی شامل ہے۔ اس پر امریکا، جاپان اور جنوبی کوریا کا احتجاج کر چکے ہیں۔''

جو بائیڈن آج جنوبی کوریا پہنچ رہے ہیں جہاں وہ جنوبی کوریا کی قیادت دو طرفہ دلچسپی اور خطے کی تازہ صورتحال پر تبادلہ خیال کریں گے۔ واضح رہے گزشتہ چند دنوں سے چین کے مشرقی سمندر پر نئی فضائی حد بندیوں سے ایک نیا تنازعہ کھڑا ہو گیا ہے۔ چین کا کہنا ہے کہ اس کا ملکیتی علاقے امریکا، جاپان اس کی حدود کی خلاف ورزیاں کر رہے ہیں۔ دوسری طرف تینوں ملکوں کا دعوی ہے کہ انہوں نے کبھی فضائی حدود کی خلاف ورزی نہیں بلکہ یہ ان کا معمول ہے۔