.

یمن:مسلح افراد کے حملوں میں دو سکیورٹی افسر ہلاک

تعز میں صدارتی محل کا سکیورٹی چیف اور صوبہ بائدہ کا نائب پولیس سربراہ قتل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں مسلح افراد کے دو الگ الگ حملوں میں دو سکیورٹی افسر ہلاک ہو گئے ہیں۔

یمنی وزارت دفاع کی نیوز ویب سائٹ 26 ستمبر ڈاٹ نیٹ کی اطلاع کے مطابق اتوار کو ملک کے دوسرے بڑے شہر تعز میں ایک کار میں سوار نامعلوم مسلح حملہ آوروں نے صدارتی محل کے سکیورٹی چیف کو گولی مار کر قتل کردیا۔

مقتول سکیورٹی افسر اس وقت اپنے دفتر کی جانب جارہے تھے کہ اس دوران وہ کارسواروں کی گولیوں کا نشانہ بن گئے۔ادھر جنوبی صوبے بائدہ میں اسی طرح کے ایک اور حملے میں مسلح افراد نے نائب پولیس سربراہ عبداللہ محمد کو فائرنگ کر کے قتل کردیا اور فرار ہوگئے۔

فوری طور پر کسی گروپ نے ان دونوں حملوں کی ذمے داری قبول نہیں کی لیکن یمن میں سرگرم جزیرہ نما عرب میں القاعدہ کی شاخ سے وابستہ جنگجو فوجی اہلکاروں اور سکیورٹی افسروں پر آئے دن اس طرح کے حملے کرتے رہتے ہیں لیکن وہ بالعموم ایسے حملوں کی ذمے داری قبول نہیں کرتے۔

البتہ القاعدہ کے اس نیٹ ورک نے گذشتہ جمعرات کو دارالحکومت صنعا میں یمنی وزارت دفاع پر خودکش بم حملے کی ذمے داری قبول کی تھی۔اس حملے میں 56 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔