.

برطانیہ اماراتی شہریوں کے لیے"ویزہ فری" ملک قرار

چھ ماہ کے قیام کے لیے الیکٹرانک کارڈ کافی ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ نے متحدہ عرب امارات کے شہریوں کے لیے اپنے ہاں مختصرمدت کے قیام کے لیے ویزے کی پابندی ختم کردی ہے۔ ابوظہبی میں قائم برطانوی سفارت خانے کی جانب سے "یو اے ای" کے شہریوں کے لیے نئی سہولت کا اعلان کر دیا ہے جس کا اطلاق یکم جنوری 2014ء سے ہوگا۔ اس نئی سہولت کے تحت اماراتی شہریوں کو برطانیہ کے سفرکے لیے ویزے کے بجائے صرف الیکٹرانک کارڈ دکھانا ہوگا، جس پرکوئی بھی شخص چھ ماہ تک برطانیہ میں قیام کرسکے گا۔

متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی"وام" نے برطانوی سفارت خانے کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اماراتی شہریوں کو برطانوی ویزے سے مستثنیٰ قرار دیا گیا ہے۔ نئےسفری ضابطے کے تحت اماراتی شہریوں کو ویزے کے طویل جھنجٹ میں پڑنے کے بجائے صرف ایک عدد الیکٹرانک کارڈ حاصل کرنا ہوگا جو تقریبا مفت ہی حاصل کیا جا سکے گا۔

الیکٹرانک کارڈ کے حامل کو برطانیہ میں چھ ماہ تک قیام کی سہولت حاصل ہوگی۔ بیان میں بتایا گیا ہے برطانیہ کے سفرکے خواہش مند کسی بھی اماراتی شہری کو دنیا میں کہیں بھی یہ کارڈ فراہم کیا جاسکتا ہے۔ کارڈ کے حصول میں زیادہ وقت بھی نہیں لگے گا۔ درخواست دہندہ کو ایک آن لائن فارم پرکرنا ہوگا جس کے بعد اسے ایک کارڈ جاری کیا جائے گا۔

اماراتی شہریوں کو اپنے کارڈ اور سفر کی تفصیلات برطانیہ روانگی سے اڑتالیس گھنٹے قبل آن لائن بتانا ہوںگی اور برطانیہ پہنچ جانے کے بعد دوبارہ اس کی تصدیق بھی ضروری ہوگی۔ یہ کارڈ برطانیہ میں صرف ایک شخص کے لیے چھ ماہ کی مدت تک قیام کے لیے کارآمد رہے گا۔ سفر کی مدت ختم ہونے سے قبل کارڈ کے حامل کو برطانیہ چھوڑنا ہوگا۔ اس کارڈ کو دوسری مرتبہ سفرکے لیے استعمال نہیں کیا جائے گا۔

اگر کوئی اماراتی شہری بار بار برطانیہ کا سفر کرنا یا چھ ماہ سے زیادہ عرصے تک قیام کا خواہاں ہو تو اسے ایک اور کارڈ جاری کیا جا سکتا ہے جس کے تحت کارڈ کے حامل کو دس سال تک برطانیہ میں قیام کرنے یا ملٹی پل وزٹ کی اجازت ہو گی۔

خیال رہے کہ حال ہی میں اماراتی وزیرخارجہ عبداللہ بن زائد آل النھیان نے کہا تھا کہ ان کی حکومت اپنے شہریوں کے یورپی یونین کے سفرکو "ویزہ فری" بنانے کے لیے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔ اس سلسلے میں ہونے والی بات چیت کا جلد ہی کوئی حل نکل آئے گا۔