.

گہری نیند کے باعث امریکی شہری ہوائی جہاز میں "محبوس"

ٹام واگنر کی گرل فرینڈ نے جہاز سے اتروانے میں مدد کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سفر ہوائی کے دوران جہاز میں مسافروں کا سو جانا معمول کی بات ہے، مگر امریکا میں ایک شخص کی گہری نیند نے اسے اس وقت جہاز میں "قید" کروا دیا جب وہ طیارہ اترنے کے وقت بیدار نہ ہوپایا اور جہاز کے عملے نے طیارے کا دروازہ لاک کر دیا۔

امریکی حکام کے مطابق ریاست لیوزیانا کا رہائشی ٹوم واگنر کیلیفورینیا جانے والی نجی فضائی کمپنی "ایکسپریس جیٹ" کی ایک پرواز میں سوار تھا۔ ہوائی جہاز اپنےمقررہ وقت پر ہوسٹن کے بُش بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اترا۔ جہاز میں تمام مسافروں کو منزل مقصود پر پہنچنے اور جہاز سے اترنے کا اعلان کیا گیا مگر ٹام واگنر گہری نیند کے باعث نہ سن پایا۔ جہاز کے عملے نے بھی اسے نہ دیکھا اور اندورنی روشنیاں بند اور طیارے کو لاک کر کے چلے گئے۔ کئی گھنٹے بعد جب ٹام کی آنکھ کھلی تو اس نے خود کو طیارے کے اندر گھپ اندھیرے میں محبوس پایا۔

واگنرنے بتایا کہ میں نے مدد کے لیے اپنی ایک گرل فرینڈ سے کہا کہ وہ ہوائی اڈے کی انتظامیہ کو صورتحال سے آگاہ کرکے مجھے جہاز سے نکلوائے۔ اس خاتون کے کہنے پر کئی گھنٹے بعد جہاز کا دروازہ کھول کرٹام واگنر کو اتارا گیا۔

نجی فضائی کمپنی ایکسپریس جیٹ کی ترجمان سامنتھا ھیریسن نے بھی اس واقعے کی تصدیق کی ہے۔ ترجمان کا کہنا ہے کہ ٹام واگنر نامی ایک امریکی جہاز میں سوتا رہ گیا تھا جس کے باعث وہ کئی گھنٹے کی تاخیر سے جہاز سے اتارا گیا ہے۔ مسزہریسن کا کہنا تھا کہ ان کی کمپنی کے کسی طیارے میں مسافر کے سوجانے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔ اس کے بعد جہاز کے عملے کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ آئندہ تمام مسافروں کے اترجانے کی تسلی کرنے کے بعد طیاروں کو لاک اپ کریں۔