یمن کے دارلحکومت صنعا میں جاپانی سفیر پر چاقو سے حملہ

حالیہ چند دنوں میں سفارتکاروں پر حملوں میں تیزی دیکھنے میں آئی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے دارالحکومت صنعا میں ایک جاپانی سفارت کار حملے میں زخمی ہو گئے ہیں۔

یمن میں جاپانی سفارت خانے کے ایک ترجمان نے بتایا کہ مسلح افراد نے یمن میں ایک جاپانی سفارت کار پر حملہ کیا تاہم اس بات کی تصدیق نہیں کی کہ ان سفارت کار کو اغوا کرنے کی کوشش کی گئی۔

سفارت خانے کے ترجمان کے مطابق سفارت خانے میں سیکنڈ سیکریٹری کے عہدے پر فائز سفارت کار پر نامعلوم افراد نے ان کے گھر کے قریب حملہ کیا اور حملے کے دوران پانچ بار چاقو سے وار کیا گیا جس کے نتیجے میں وہ زخمی ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق خنجر سے حملہ اس وقت کیا گیا جب وہ حملہ آوروں سے اپنے آپ کو بچانے کے لیے مزاحمت کی۔ ان کے سر اور ہاتھ پر خنجر کی وجہ سے زخم آئے ہیں مگر ذرائع کے مطابق اب ان سفارت کاری کی حالت بہتر ہے لیکن وہ تاحال ہسپتال میں ہیں۔

رائیٹرز کے مطابق ایک ٹیکسی جس پر دو مسلح شخص سوار تھے ان سفارت کار کی کار کے آگے آکر رکی جب وہ اپنے گھر سے سفارت خانے کی جانب نکلے تھے۔

ابھی تک کسی گروہ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ خیال رہے کہ یمن میں گزشتہ کچھ مہینوں سے غیر ملکیوں پر حملوں میں تیزی آئی ہے۔

واضح رہے کہ یمن میں علی عبداللہ صالح کے بعد سے عدم ستحکام کی صورت حال ہے اور وہاں القاعدہ سمیت کئی عسکری تنظیم موجود اور سرگرم ہے۔ علی عبداللہ صالح کے خلاف زبردست بغاوت کے نتیجے میں وہ سنہ 2011 میں اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے۔

حالیہ دنوں میں کئی سفارت کاروں اور مغربی ممالک کے باشندوں کو مسلح گروہوں نے ہلاک یا اغوا کیا ہے جبکہ بعض حملوں کے پیچھے القاعدہ اور شدت پسند بھی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں