مقبوضہ کشمیر میں جعلی مقابلے پر6 بھارتی فوجیوں کا کورٹ مارشل

تین مزدوروں کی ہلاکت پر کرنل سمیت اہلکاروں پر فوجی عدالت میں مقدمہ چلے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں تین سال قبل حریت پسندوں کے ساتھ ایک جعلی مقابلے میں تین مزدوروں کو ہلاک کرنے کے واقعے میں ملوّث دو افسروں سمیت چھے اہلکاروں کا کورٹ مارشل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق ایک کرنل ،ایک میجر اور چار بھارتی فوجی اہلکاروں کے خلاف فوجی عدالت میں مقدمہ چلانے کا فیصلہ بھارت کے زیر انتظام مقبوضہ کشمیر میں جعلی مقابلے کی ابتدائی تحقیقات کے بعد کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر کے شمالی ضلع کپواڑہ کے ایک گاؤں مچھیل میں اپریل 2010ء میں قابض فوجیوں نے ایک جعلی مقابلے دوران تین مزدوروں کو ہلاک کردیا تھا اور یہ دعویٰ کیا تھا کہ تین ''پاکستانی دہشت گرد'' مارے گئے ہیں۔اس مقابلے میں حصہ لینے والے بھارتی فوج کے نو اہلکاروں اور دو مقامی لوگوں کے خلاف پولیس کے ہاں قتل کا مقدمہ درج کرایا گیا تھا۔

بھارتی فوج کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اب اس جعلی مقابلے کے الزام میں کرنل ڈی کے پٹھانیا ،میجر اُپندر اور دوسرے اہلکاروں کا کورٹ مارشل کیا جائے گا۔اس جعلی مقابلے کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں پُرتشدد ہنگامے پھوٹ پڑے تھے اور بھارتی سکیورٹی فورسز کی کارروائیوں اور ان کے ساتھ جھڑپوں میں ایک سو تئیس افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہوگئے تھے جبکہ ہزاروں کشمیری نوجوانوں کو احتجاجی مظاہروں میں حصہ لینے پر گرفتار کر لیا گیا تھا۔

یادرہے کہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں 1989ء سے کشمیری حریت پسند مکمل آزادی یا پھر پاکستان کے ساتھ الحاق کے لیے قابض بھارتی فوج کے خلاف مسلح جدوجہد کررہے ہیں اور اس دوران ہزاروں افراد مارے گئے یا غائب کردیے گئے ہیں۔مقبوضہ کشمیر سے تعلق رکھنے والی حریت پسند تنظیموں کے فراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق بھارتی فوج کی کارروائیوں میں ایک لاکھ سے زیادہ افراد شہید ہوچکے ہیں۔

انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ گذشتہ چوبیس سال کے دوران مقبوضہ وادی میں کم سے کم دس ہزار افراد غائب کردیے گئے ہیں اور وہاں چھے ہزار سے زیادہ بے نامی قبریں برآمد ہوئی ہیں جن کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ بھارتی فوجیوں نے کشمیریوں کوجعلی مقابلوں میں ہلاک کرنے کے بعد انھیں ان قبروں میں اتار دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں