خلاف قانون فنڈز جمع کرنے والوں کا ٹرائل کریں گے: سعودی عرب

عوام غیرقانونی فنڈ ریزنگ کرنے والوں کو بے نقاب کریں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے ایک مرتبہ پھر خلاف قانون عطیات جمع کرنے اور شامی متاثرین کے لیے امدادی سامان اکٹھا کرنے والوں کو سخت تنبیہ کی ہے۔

اخبار"الحیاۃ" کے مطابق وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے کہا ہے کہ حکومت کی اجازت کے بغیر شامی متاثرین کے لیے عطیات جمع کرنے والوں کا ٹرائل کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اپنی تحقیقات میں پتہ چلایا ہے کہ مملکت میں فنڈز جمع کرنے والے عناصر میں کئی غیر ملکی بھی ملوث ہیں، جو سوشل میڈیا کے ذریعے سادہ لوح شہریوں کی جیبوں سے پیسے نکال کر اپنے مذموم مقاصد کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ جنرل الترکی نے عوام سے اپیل کی کہ وہ منظور شدہ امدادی اداروں کے علاوہ کسی نو سر باز کے جھانسے میں نہ آئیں بلکہ خلاف قانون فنڈز جمع کرنے والوں کو بے نقاب کرنے میں حکومت کی مدد کریں۔

وزارت داخلہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ خلاف ضابطہ کسی ادارے یا شخص کو نقد رقوم اور دیگر اشیاء کی صورت میں امدادی سامان جمع کرنے کی اجازت نہیں ہو گی کیونکہ یہ شبہ ہے کہ رقوم اور دیگر سامان مستحق متاثرین کے بجائے دیگر مقاصد کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاض حکومت متاثرہ شامی بھائیوں کی ہرممکن مدد کر رہی ہے۔ شہریوں میں سے کسی نے شامی متاثرین کی مدد کرنا ہے تو وہ حکومت کے توسط سے اپنے عطیات بھجوا سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں