.

اسرائیل: ایرو تھری میزائل کا کامیاب تجربہ کیمائی

اگلے سال فوج کے حوالے کیا جائے گا، لانچنگ پر امریکی حکام موجود

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے سکڈ میزائل حملے کو روکنے کیلے اپنے جدید تر بنائے گئے میزائل ایرو تھری میزائل سسٹم کا کا تجربہ کر لیا ہے۔ اسرائیل نے یہ تجربہ لبنان کی عسکری ملیشیا حزب اللہ، شام اور ایران کے طرف سے خطرات کے پیش نظر کیا ہے۔

اسرائیل کی اس فضائی شیلڈ کا ایک اہم پہلو یہ ہے کہ اس ایرو تھری کا ڈیزائن سیٹلائٹ کامی کیز کے ساتھ منسلک کیا گیا ہے۔ یہ میزائل ان متحرک مشینوں یا گاڑیوں کو نشانہ بنانے کے حوالے سے معروف ہیں۔ جو زمین سے اوپر بلیسٹک میزائلوں کا پیچھا کر سکتے ہیں۔ یہ میزائل کیمیائی حیاتیاتی اور جوہری وارہیڈز کومحفوظ طریقے سے منتشر کرنے میں کام آتے ہیں۔

ایران، شام پہلے ہی اس نوعیت کے میزائل رکھتے ہیں جبکہ اسرائیل کا خیال ہے کہ اب یہ میزائل ٹیکنالوجی ایران اور شام کی اتحادی عسکری ملیشیا حز ب اللہ کے پاس بھی موجود ہیں۔

جمعہ کے روز لانچ کیے گئے اس ایرو تھری کے ذریعے بحر متوسط پر یہ اس میزائل سسٹم کی دوسری پرواز تھی۔ تاہم اسرائیلی حکام کا کہنا ہے کہ اس کے سامنے کوئی ایسا ہدف نہ تھا جسے اس کے ذریعے روکنا مقصود ہوتا۔ اسرائیل نے اس سے پہلے ایرو ٹو کا تجربہ ایک دہائی پہلے کیا تھا۔

اب ایرو تھری کا کامیابی سے تجربہ کیا گیا ہے۔ اسرائیلی میزائل دیفینس سسٹم کے سربراہ یائر رماتی کا کہنا ہے کہ '' اس کامیاب تجربے کے موقع پر امریکی حکام بھی موجود تھے۔ اسرائیلی حکام کے مطابق ہے کہ اگلے سال یہ میزائل فوج کے حوالے کر دیے جائیں گے۔