.

کویت میں ترک جہاز کے عملے پر عراقی مسافروں کا تشدد

ہنگامی لینڈنگ اور خراب موسم کے باوجود بصرہ جانے پر اصرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہوائی جہازوں کے عملے اور مسافروں کے درمیان تلخ کلامی معمول کی بات ہے مگر حال ہی میں ترک مسافر طیارے کے عملے کے ساتھ عراقی مسافروں نے ایک قدم آگے بڑھ کر انہیں تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔

کویت کے عربی اخبار "الوطن" کی رپورٹ کے مطابق حال ہی میں استنبول سے عراق کے شہر بصرہ کے لیے روانہ ہونے والے طیارے کو کویت میں ہنگامی لینڈنگ کرنا پڑی تو اس پر میں سوار پندرہ عراقیوں نے طیارے کے پائلٹ، اس کے معاون ہواباز اور ایئرہوسٹس پر تشدد کرنا شروع کر دیا۔ عراقی مسافروں کو عملے کے افراد سے دھینگا مشتی سے روکنے کے لیے ہوائی اڈے کے سیکیورٹی عملے کو مداخلت کرنا پڑی۔

ذرائع کے مطابق طیارے کے پائلٹ نے فضاء میں دوران سفر بتایا کہ خراب موسم کے باعث وہ بصرہ نہیں جا سکے گا، لہٰذا طیارے کوا واپس استنبول لے جایا جا رہا ہے۔ مسافروں اس پر اعتراض کیا اور کہا کہ ہمیں ہر صورت میں بصرہ پہنچایا جائے۔ اس پر طیارے کو ہنگامی طور پر کویت کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اتارا گیا۔ اس پر مسافروں نے مزید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے عملے کو پیٹ ڈالا۔

سیکیورٹی عملے کے چلے جانے کے بعد مشتعل مسافر دورہ کود پڑے اور ترک ہوائی جہاز کا دروازہ کھول کرکیپٹن پر تشدد کیا، جس پردوبارہ سیکیورٹی حکام کو بلانا پڑا تھا۔