.

برطانوی شہری کے ہاتھوں مراکشی بچیوں کا اغوا اور زیادتی

عدالت نے مقدمہ کی سماعت 11 فروری تک ملتوی کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک نوعمر مراکشی لڑکی کے ساتھ مبینہ طور پر زیادتی کے الزام میں گرفتار برطانوی شہری کیخلاف مقدمے کی سماعت اگلے ماہ تک ملتوی کر دی گئی ہے۔ برطانوی شہری رابرٹ بل کو اس الزام میں پچھلے سال ماہ جون میں گرفتار کیا گیا تھا۔

انسٹھ سالہ رابرٹ پر الزام ہے کہ وہ دو کم سن مراکشی بچیوں کو اغوا کرنے اور تیسری کم سن لڑکی کے ساتھ زیادتی کرنے کے جرم کا مرتکب ہوا ہے۔ اسے اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب وہ ایک پٹرول پمپ پر اپنی سپین کی رجسٹرڈ کار میں موجود تھا اور اس نے ایک چھ سالہ بچی کو مبینہ طور پر اغوا کیا ہوا تھا۔

مقامی لوگوں نے اسے گھیرے میں لے کر پولیس کو اطلاع کر دی اور اسے گرفتار کر لیا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ گزشتہ روز رابرٹ بل عدالت میں پیش نہیں ہوا ہے۔ عدالت نے سماعت 11 فروری تک ملتوی کر دی ہے۔

انسانی حقوق کی تنظیم سے وابستہ محمد بینائیسا کا کہنا ہے کہ رابرٹ بل کو ان دنوں دارالحکومت رباط سے جڑواں شہر کی جیل میں رکھا گیا ہے۔ رابرٹ بل کے ہاتھوں بچیوں کے اغوا اور زیادتی کی خبریں سامنے آنے پر مراکش کی عوام نے سخت غم و غصہ کا اظہار کیا تھا۔