.

یو این امن مندوب کی امریکی، روسی وزرا خارجہ سے ملاقات متوقع

دوستان شام کے وزراء کا جائزہ اجلاس کل پیرس میں ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے بحران کے حل کے سلسلے میں دوسرے جنیوا اجلاس کو کامیاب بنانے کے لیے "دوستان شام" کے وزراء خارجہ سطح کا اجلاس کل [اتوار] کو فرانس کے صدر مقام پیرس میں ہو رہا ہے جبکہ شام کے لیے امریکا کے خصوصی ایلچی الاخضر الابراہیمی 13 جنوری کو امریکی وزیر خارجہ جان کیری اور ان کے روسی ہم منصب سیرگی لافروف سے الگ الگ ملاقات کریںگے۔ ان ملاقاتوں میں دوسرے جنیوا اجلاس کونتیجہ خیز بنانے کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

روسی خبر رساں ادارے" انٹرفیکس" کے مطابق 'دوستان شام' گروپ کے گیارہ وزراء خارجہ کل اتوار کو فرانس کے دارالحکومت پیریس میں جمع ہو رہےہیں۔ اجلاس میں شامی اپوزیشن اتحاد کے سربراہ احمد الجربا اور دیگر شامی اپوزیشن نمائندے بھی شرکت کریں گے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق دوستان شام کا پیریس میں منعقدہ اجلاس 22 جنوری کو دوسرے جنیوا اجلاس کوکامیاب بنانے کی حکمت عملی طے کرنے کے لیے نہایت اہمیت کا حامل ہے لیکن اس کے باوجود اس بات کا کوئی امکان موجود نہیں ہے کہ آیا یہ عالمی سفارتی مساعی صدر بشارلاسد کو اقتدار سے ہٹانے اور ایک مکمل بااختیار عبوری حکومت کی تشکیل پرقائل کرنے اور انہیں پہلے جنیوا اجلاس کی شرائط کا پابند بنانے میں کامیاب ہوسکے گا یا نہیں۔

دوسری جنیوا کانفرنس کی کامیابی اس اعتبار سے بھی سوالیہ نشان بنتی جا رہی ہے کہ اس کے انعقاد سے قبل ہی شامی اپوزیشن میں بھی اختلافات بڑھتےجا رہے ہیں۔ پچھلے دنوں انہی اختلافات کی بناء پر قومی عبوری کونسل کے کئی عہدیدار مستعفی بھی ہو چکے ہیں۔

ادھر فرانس میں متعین دوستان شام ممالک کے سفراء نے رکن ممالک پرزور دیا ہے کہ وہ اتوار کے اجلاس کوموثر بنانے کے لیے اس میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔ سفیروں کا کہنا ہے کہ "جنیوا2" کے عملی انعقاد سے قبل اس کی کامیابی کی راہ میں حائل رکاوٹوں کا نہ صرف جائزہ لینا ضروری ہےبلکہ انہیں ختم کرنا بھی دوستان شام کی ذمہ داری ہے۔

شامی اپوزیشن اتحاد کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ جنیوا اجلاس میں شرکت سے قبل پیرس میں ہونے والے 'جائزہ اجلاس' میں ان کی جانب سے مطالبات کی ایک فہرست بھی پیش کی جائے گی۔ ان مطالبات میں شام میں جنگ سے متاثرہ علاقوں تک سیکیورٹی کوری ڈور کا قیام، محصور علاقوں کی ناکہ بندی کا خاتمہ، متاثرین کو خوراک اور ادویہ کی فوری فراہمی اور سرکاری فوج کی جیلوں میں ڈالے گئے خواتین اوربچوں کی رہائی جیسے مطالبات شامل ہوں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکا کی جانب سے شامی اپوزیشن کے مطالبات تسلیم کرانے کے لیے مکمل یقین دہانی کرائی گئی ہے۔ اس ضمن میں جلد ہی میں شام میں متعین امریکی سفیر رابرٹ فورڈ قیدیوں کی ایک فہرست لے کر ماسکو بھی جائیں گے اور روسی حکام کے ذریعے شامی باغیوں کی فہرست کے مطابق قیدیوں کی رہائی عمل میں لانے کی کوشش کی جائے گی۔