.

کویت میں شامی عوام کے لیے عطیات جمع کرنے کی مہم

امیرکویت کی مردوخواتین اور خیراتی اداروں کو بڑھ چڑھ کر عطیات دینے کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کویت کے امیر شیخ صباح الاحمد الصباح نے شامی عوام کے لیے عطیات جمع کرنے کی ملک گیر مہم شروع کی ہے۔

کویت کے شاہی دربار کی جانب سے سوموار کو جاری کردہ بیان کے مطابق ''امیر نے تمام شہریوں ،مردوخواتین، نوجوانوں اور بوڑھوں، خیراتی تنظیموں ،سول سوسائٹی کے اداروں اور نجی شعبے سے شامی بھائیوں کے لیے قومی مہم میں عطیات دینے کی اپیل کی ہے''۔

انھوں نے کہا کہ ''شامی عوام کے مصائب کے خاتمے کے لیے عالمی برادری کی ناکامی نسلوں تک باعث شرم رہے گی''۔اتوار کی رات متعدد کویتی اداروں نے چودہ کروڑ دس لاکھ ڈالرز اکٹھا کرنے کی مہم شروع کی تھی۔اس رقم سے شامی مہاجرین کے لیے کیمپ تعمیر کیے جائیں گے۔

امیر کویت کی جانب سے شامی مہاجرین کے لیے امداد کی اپیل کویت شہر میں اقوام متحدہ کے زیراہتمام ڈونرز کانفرنس کے انعقاد سے دوروز قبل کی گئی ہے۔اقوام متحدہ نے شام میں جاری خانہ جنگی سے متاثر ہونے والے لاکھوں افراد کے لیے ساڑھے چھے ارب ڈالرز کی امداد کی اپیل کی ہے۔

جنوری2013ء میں منعقدہ پہلی ڈونرز کانفرنس میں کویت نے تیس کروڑ ڈالرز کی امداد دی تھی۔اس کانفرنس میں ڈیڑھ ارب ڈالرز کے عطیات دینے کے وعدے کیے گئے تھے۔

اقوام متحدہ کی انسانی امور کی سربراہ ولیری آموس نے جنیوا کانفرنس میں سوموار کو کہا ہے کہ شامی عوام اور شام میں امدادی سرگرمیوں کے لیے ساڑھے چھے ارب ڈالرز درکار ہوں گے۔ان میں سے دوارب تیس کروڑ ڈالرز شام میں ترانوے لاکھ افراد اور چار ارب بیس کروڑ ڈالرز اکتالیس لاکھ شامی مہاجرین کو امداد مہیا کرنے پر خرچ کیے جائیں گے۔

درایں اثناء شامی باغیوں کے نیوز نیٹ ورک سانا کے مطابق شامی حکومت کی فورسز نے دمشق میں فلسطینی مہاجرین کے کیمپ یرموک کے لیے انسانی امداد روک دی ہے۔