.

چھے سعودی لڑکیاں ریاض کے مشرق میں ڈوب مریں

محکمہ شہری دفاع کا نشیبی دلدلوں میں نہانے پر انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے محکمہ شہری دفاع نے دارالحکومت ریاض کے مشرق میں واقع ایک نشیبی دلدل میں چھے لڑکیوں کے ڈوب مرنے کی اطلاع دی ہے۔

محکمہ شہری دفاع کے ترجمان نے اتوار کو بتایا ہے کہ انھیں ہفتے کی سہ پہر واقعہ سے متعلق ایک فون کال موصول ہوئی تھی۔اس کے بعد انجمن ہلال احمر کے ایوی ایشن ونگ کو اطلاع دی گئی اور اس نے ان تمام لڑکیوں کو دلدل سے نکالنے میں مدد دی ہے۔

سعودی انجمن ہلال احمر کے سربراہ عبدالرحمان الخدیری کا کہنا ہے کہ ان کی امدادی ٹیم صرف چھے منٹ میں جائے وقوعہ پر پہنچ گئی تھی۔العربیہ کے نمائندے کا کہنا ہے کہ چار لڑکیوں کو ان کے والدین نے پانی سے نکالا تھا جبکہ دو کو محکمہ شہری دفاع کے اہلکاروں نے ہفتے کی شام چار بجے کے قریب نکالا تھا اور خراب موسم اور سگنل نہ ہونے کی وجہ سے امدادی سرگرمیوں میں تاخیر ہوئی تھی۔

سعودی عرب کا محکمہ شہری دفاع شہریوں کو خاص طور پر خراب موسم میں تالابوں اور نشیبی دلدلوں میں نہانے اور تیراکی پر خبردار کرتا رہتا ہے۔محکمے نے گذشتہ سال کے دوران وادیوں میں بنے ان تالابوں سے پینتالیس لاشیں نکالی تھیں۔