.

عدلیہ کے اختیارات کم ، ترک پارلیمنٹ میں مکے گھونسے چل گئے

ایک رکن کا ناک زخمی، چہر ے پر خون بہہ نکلا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک پارلیمنٹ نے عدلیہ پر حکومتی کنٹرول بڑھانے کیلیے ہفتے کے روز نیا بل منظور کر لیا ہے۔ اس موقع پر پارلیمنٹ میں شدید ہنگامہ آرائی کا ماحول رہا۔ حکمران جماعت اور اپوزیشن کے ارکان پارلیمنٹ کے دوران مارکٹائی ہوتی رہی اور مکوں گھونسوں کا استعمال کیا گیا۔

راتوں رات بل کی منظوری لینے کے باعث ہونے والی لڑائی کے دوران کم از کم ایک رکن پارلیمنٹ کا چہرہ خون آلود ہو گیا۔ اس کے زخمی ہونے کی وجہ ناک پر لگنے والی چوٹ بنی ہے۔

واضح رہے ترک حکومت کو پچھلے چند ماہ سے مبینہ کرپشن الزامات کا سامنا ہے اور ان پراسیکیوشن سے متعلقہ شعبہ دیکھ رہا ہے۔ اس وجہ سے حکومت بیسیوں افسران کے تبادلے کر چکی ہے، جبکہ عدلیہ اور پراسیکیوشن کے اختیارات میں کمی بھی حکومت کا ہدف ہے۔

اپوزیشن کی سخت مخالفت کے باوجود پارلیمنٹ میں حکومت کا پیش کردہ بل زیر بحث لایا گیا تو اپوزیشن احتجاج شروع کر دیا اور دیکھتے ہی دیکھتے ایوان مچھلی منڈی بن گیا۔

عدلیہ کے بارے میں نئی قانون سازی کپشن الزامات کے حوالے سے بچاو کی ایر دوآن حکومت کی آخری کوشش تصور کی جا رہی ہے جو حکومت نے اپنے قانونی ماہرین سے طویل مشاورت کے بعد ایک بل کی صورت میں پیش کیا ہے۔

پارلیمنٹ کی منظوری کے بعد اس قانون پر صدر کے دستخطوں سے یہ منظور کردہ بل باضابطہ قانون بن جائے گا۔ امید ہے اس قانون کے نفاذ سے حکومت کرپشن کیسز سے نجات پا سکے گی۔