.

حسنی مبارک بیٹوں سمیت سوٹ پہن کر میں عدالت میں پیش

صدارتی محل کے اثاثہ جات پر قبضے اور کرپشن کیس کی سماعت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے سابق معزول صدر محمد حسنی مبارک خلاف معمول قیدیوں کے لباس کے بجائے پینٹ کوٹ سوٹ زیب تن کئے میں عدالت میں پیش ہوئے۔

مصر کے سرکاری ٹیلی ویژن پر نشر کی گئی ایک ویڈیو فوٹیج میں پیشی کے دوران سابق مردِ آہن کو پنجرہ نما ایک کیبن میں اپنے دونوں صاحبزادوں علاء اور جمال کے ساتھ دکھایا گیا ہے۔ معزول صدرکےخلاف مصر کی عدالتوں میں کئی مقدمات زیرسماعت ہیں۔ آج [بدھ کو] انہیں ایک سو ملین پاؤنڈ کی رقم خور برد کرنے اور صدارتی محلات کے اثاثہ جات پرناجائز قبضے جیسے الزامات عدالت میں پیش کیا گیا۔

برطانوی خبر رساں ادارے "رائیٹرز" کے مطابق ویڈیو فوٹیج میں حسنی مبارک اور ان کے دونوں صاحبزادوں کو ماضی کی نسبت زیادہ مطمئن دیکھا گیا۔ وہ خلاف معمول قیدیوں کےسفید لباس کے بجائے ڈیزئنر سوٹ زیب تن کیے ہوئے تھے۔ مقدمہ کی سماعت کے دوران عدالتی بنچ کے تمام ارکان جسٹس محمد عامر جادو، ایڈووکیٹ علی النمر،محمد خیراللہ اور ان کے سیکرٹری محمد جبر اور محمد عوض بھی موجود تھے۔

قاہرہ میں پولیس آڈیٹوریم میں مقدمہ کی سماعت کے دوران حسنی مبارک اور دیگر ملزمان کے پہنچتے ہی اُن کی موجودگی کو یقینی بنانے کے لیے بلند آواز میں ان کے نام پکارے گئے۔ عدالت کے چیف جسٹس نے بآواز بلند پکارا "حسنی مبارک!" ۔ اس پر سابق صدر نے جواب دیا "میں حاضر ہوں"۔ اس کے بعد ان کے دونوں صاحبزادوں کا باری باری نام لیا گیا اور انہوں نے"میں موجود ہوں" کے الفاظ میں عدالت میں اپنی حاضری لگوائی۔ اس موقع پر چار دیگر ملزمان کوبھی پکارا گیا، تاہم انہیں بعد ازاں بری کر دیا گیا۔

ملزم کی حاضری کے بعد عدالت کی نے پر ملزمان سے صدارتی محلات کے اثاثہ جات پر قبضے اور سرکاری خزانے میں کرپشن سے متعلق جواب طلب کیا۔ اس پر حسنی مبارک نے استغاثہ کے الزمات مسترد کر دیے۔ انہوںنے کہا کہ پراسیکیوٹر جنرل نے میرے حوالے سے کرپشن کی جو کہانی تیار کی ہے وہ جھوٹ کا پلندہ ہے۔ اس کے بعد دونوں صاحبزادگان نے بھی باری باری کرپشن سے متعلق الزامات کو بے بنیاد قرار دیا۔