.

اسرائیل کی سلامتی کیلیے ہر تیاری کر رہے ہیں، نیتن یاہو

''سلامتی کیلیے کیے جانے والے اقدامات کی تفصیل نہیں بتا سکتا''

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کے وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے کہا ہے اسرائیل کی سلامتی کیلیے تمام ضروری اقدامات کیے جارہے ہیں۔ تاہم یہ نہیں بتایا جا سکتا کہ اس سلسلے میں کیا کر رہے ہیں اور کیا نہیں کر رہے ہیں۔ اس امر کا اظہار نیتن یاہو نے حزب اللہ کے ٹھکانے پر، پر اسرار بمباری کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کیا۔

اسرائیلی ذرائع نے پیر کی شام '' العربیہ '' کو بتایا تھا کہ اسرائیل نے حزب اللہ کے ایک ٹھکانے پر فضائی حملہ کیا ہے۔ یہ حملہ لبنان اور شام کے سرحدی علاقوں میں حزب اللہ کے ٹھکانے پر کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں شام میں انسانی حقوق سے متعلق آبزرویٹری کا کہنا ہے کہ ان حملوں کا مقصد حزب اللہ کے میزائل اڈے کو نشانہ بنانا تھا۔

اسرائیلی فضائی حملے کے نتیجے میں حزب اللہ کے متعدد ارکان مارے گئے ہیں۔ تاہم اسرائیلی حکام نے اس بارے میں کسی تبصرے سے انکار کر دیا ہے۔ دوسری جانب حزب اللہ نے بھی کہا ہے کہ لبنانی علاقے میں اس کے کسی مرکز پر کوئی حملہ نہیں کیا گیا ہے۔ البتہ دشمن طیاروں کو بڑی تعداد میں مشرقی لبنان میں دیکھی گئی ہے۔

لبنان کے قومی خبر رساں ادارے کے مطابق اسرائیلی جنگی طیاروں نے دو حملے کیے ہیں۔ ان حملوں کا نشانہ لبنان کی بیکا وادی کا سرحدی علاقہ تھا۔ خبرساں ادارے کے مطابق اسرائیلی طیاروں نے لبنان کے مشرقی اور مغربی کے درمیان نچلی پروازیں کیں۔ ایک غیر جانبدار خبرساں ادارے کے مطابق اسرائیلی طیاروں کی پروازیں ایک '' ماک '' کے طور پر تھیں۔

اسرائیلی وزیر اعظم نے ان رپوٹس پر کسی تبصرے کے بجائے سیدھا سیدھا یہ کہہ دیا ہے کہ اسرائیل کی سلامتی کیلیے ہر طرح کے انتظامات کیے جا رہے ہیں ، اگرچہ انہوں نے ان تیاریوں کی تفصیل جاری کرنا پسند نہیں کیا ہے۔