.

سعودی عرب کی 'مزدور دوست' پالیسی کی عالمی سطح پر تحسین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مزدوروں کے حقوق کے لیے سرگرم عالمی ادارے انٹرنیشنل لیبر آرگنائیزیشن [آئی ایل او] نے سعودی عرب کی مزدور دوست پالیسی کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریاض کی لیبر پالیسی کے نتیجے میں ملکی اور علاقائی ترقی کی رفتار تیز ہوئی ہے۔

آئی ایل او کے ڈائریکٹر جنرل کائے رائیڈر نے سعودی خبر رساں ادارے "ایس پی اے" سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 'لیبر مارکیٹ کے حوالے سے سعودی حکومت کی مساعی قابل قدر ہیں۔ ریاض حکومت کی مزدوروں کے حوالے سے بہتر قانون سازی اور موثر منصوبوں نے ملکی اور علاقائی ترقی اور مارکیٹ کے استحکام میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

قبل ازیں کائے رائیڈر نے ریاض میں علاقائی تاجروں کی دوسری سالانہ کانفرنس میں شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ سعودی وزارت لیبر کے اقدامات کے نتیجے میں نہ صرف روزگار کے مواقع میں اضافہ ہوا بلکہ ترقی کی شرح بھی پہلے سے کئی گنا بہتر ہوئی ہے۔ نیز سعودی حکومت کی جانب سے نجی شعبے میں خواتین کے لیے کام کے مواقع پیدا کرنا بھی قابل تحسین اقدامات ہیں۔

مسٹر رائیڈر کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کی جانب سے مزدور پیشہ افراد کی اجرت کی کم سے کم حد مقرر کرنے اور کام کے اوقات کا تعین لیبر حقوق کے حوالے سے اہم ترین پیش رفت ہے۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ سعودی عرب لیبر قوانین کو مزید بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ مزدوروں کے لیے پُرامن ماحول پیدا کرنے کی پوری کوشش کرے گا۔

اس موقع پر سعودی ایوان صنعت وتجارت کے نائب چیئرمین فہد الربیعہ نے کہا کہ ان کا ملک لیبر کو زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہم کرنے کے لیے آئین سازی کا عمل جاری رکھے ہوئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ قانون سازی کے ذریعے ملک میں بے روزگاری کے خاتمے اور سعودی باشندوں کے لیے زیادہ سے زیادہ پرکشش روزگار کے مواقع پیدا کرنے میں مدد ملے گی۔ اس ضمن میں شہریوں میں عمومی تعلیم اور پیشہ ورانہ مہارت کے حوالے سے بھی موثر اقدامات کیے جا رہے ہیں تا کہ لیبر کا بیرونی بوجھ کم کیا جا سکے۔