.

لاپتا طیارہ : ویت نام نے سرچ آپریشن معطل کر دیا

ملائیشیا نے سرچ آپریشن کا دائرہ مزید پھیلا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ویت نام نے ملائیشیا کے لاپتا طیارے کی تلاش کےلیے جاری آپریشن معطل کر دیا ہے۔ اس امر کا اعلان ویت نامی حکام نے بدھ کے روز کیا ہے۔ اس سلسلے میں جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ویت نام نے لاپتا طیارے کی تلاش کے لیے کسی واضح سمت کے تعین تک اپنی کوششوں کو روک دیا ہے۔

ویت نام کے نائب وزیر ٹرانسپورٹ فام کیئی نے واضح کیا کہ بعض سرگرمیاں معطل کرنے کے باوجود محدود پیمانے پر سمندر میں سرچ آپریشن جاری ہے۔ ان کا کہنا تھا '' ہم نےعارضی طور پر تلاش اور ریسکیو کے حوالے سے کچھ سرگرمیاں معطل کر دی ہیں۔''

دوسری جانب ملائشیا نے اعلان کیا ہے کہ سرچ آپریشن کا دائرہ وسیع کیا جا رہا ہے۔ ملائیشیا کی طرف سے تلاش کےلیے جاری کوششوں کا دائرہ زیادہ تر بحر انڈیمان کے شمال مغربی حصوں پر پھیلا ہوا ہے۔ یہ علاقہ انڈونیشیا کے جزیرہ سماٹرا سے اوپر بنتا ہے۔

ملائیشین حکام کے مطابق ''یہ ایک بہت وسیع علاقہ ہے جس میں تلاش جاری ہے، کیونکہ ہم کوئی بھی امکان ضائع نہیں کرنا چاہتے ہیں ، بلکہ تمام تر امکانات کی بنیاد پر تلاش جاری رکھے ہوئے ہیں''۔اس علاقے میں تلاش کا دائرہ پھیلانے کی وجہ یہ امکان بتایا گیا ہے کہ ہو سکتا ہے طیارے نے اپنا راستہ چھوڑ دیا ہو۔

واضح رہے ملائیشین حکام ہفتے کے روز سے لاپتا مسافر طیارے کی تلاش کےلیے ملائیشیا اور ویت نام کے درمیان جنوبی چینی سمندر میں سرگرداں ہیں۔ لیکن ابھی تک کوئی سراغ نہیں ملا ہے۔ ملائیشیا ائیر لائنز کی پرواز ایم ایچ 370 ہفتے کو علی الصباح 227 مسافروں اور عملے کے 12 ارکان کے ساتھ بیجنگ کے لیے روانہ ہوئی تھی، تاہم 41 منٹ بعد ائیر ٹریفک کنٹرول سے رابطہ منقطع ہو جانے کے بعد سے طیارہ مسلسل لا پتا ہے۔اس وقت طیارہ 35000 فٹ کی بلندی پر پرواز کر رہا تھا۔

طیارے کی تلاش کے لیے ملائشیا اور چین کی ٹیمیں مصروف ہیں جبکہ دیگر ملکوں کا تعاون بھی حاصل کیا گیا ہے۔ لیکن اب تک اس کے بارے میں کچھ معلوم نہں ہو سکا ہے کہ وہ کسی حادثے کا شکار ہو کر کہاں گیا ہے۔ درجنوں بحری جہاز اور طیارے سرچ آپریشن میں شامل ہو چکے ہیں۔