.

حوثی جنگجوؤں کی مداخلت روکنے کے لیے یمنی فوج کا گشت

مفاہمتی کمیٹی ہمدان کے متحارب فریقین میں صلح کرانے میں ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دارالحکومت دمشق کے شمالی مغربی علاقے ہمدان میں حوثی شدت پسندوں اور دیگر قبائلی جنگجوؤں کا راستہ روکنے کے لیے یمنی فوج نے اہم مقامات پر پوزیشنیں سنبھال کر گشت شروع کر دیا ہے۔

سرکاری فوج نے ہمدان کے داخلی اور خارجی راستوں کے آس پاس حوثیوں کی جانب سے کھڑی کی گئی رکاوٹیں ہٹانا شروع کر دی ہیں اور حوثیوں کی نقل وحرکت پر گہری نظر رکھی جا رہی ہے۔

فوج نے حوثی شدت پسندوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ ہمدان اور دارالحکومت صنعاء کی طرف پیش قدمی سے اجتناب کریں اور ہمدان میں موجود اپنے مورچے خالی کر دیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق پچھلے چند ایام میں روز یمنی فوج نے ہمدان شہر میں حوثیوں کے کئی اہم ٹھکانوں کو اپنی تحویل میں لینے میں کامیابی حاصل کی ہے۔

حکومت کی جانب سے حوثیوں اور ان کے حریف قبائل کے مابین کشیدگی کم کرنے کے لیے ایک کمیٹی بھی قائم کر رکھی ہے لیکن ابھی تک یہ کمیٹی کشیدگی کم کرنے میں بری طرح ناکام رہی ہے۔ کمیٹی کی جانب سے حوثیوں سے کہا گیا تھا کہ وہ اپنی توسیعی کارروائیوں کو روک دیں تاکہ بات چیت کا عمل آگے بڑھایا جا سکے لیکن قبائلی جنگجوؤں کی جانب سے پیش قدمی اور حملے بدستور جاری رہے ہیں۔

خیال رہے کہ یمنی شہر ہمدان اور بعض دوسرے علاقوں میں گذشتہ کچھ عرصے سے شیعہ مسلک کے حوثی شدت پسندوں اور سلفی قبائل کے درمیان خونریز جھڑپیں ہوتی رہی ہیں جن میں دونوں طرف بھاری جانی نقصان بھی ہوا ہے۔ جنوبی یمن کے صعدہ، الجوف، عمران اور ارحب اضلاع میں اب بھی قبائل باہم دست و گریباں ہیں۔