.

طالب علم کے ہاتھوں قتل ہونے والے استاد کے لیے ایوارڈ

شاہ عبداللہ کی متاثرہ خاندان کے لیے فوری امداد کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خادم الحرمین الشریفین شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز نے ایک طالب علم کے حملے میں جاں بحق ہونے والے استاد کو مملکت کا اہم قومی اعزاز شاہ عبدالعزیز ایوارڈ دینے، مقتول کے یتیم بچوں کے لیے مناسب گھر اور کفالت کے لیے پانچ لاکھ ریال کی رقم فراہم کرنے کا حکم دیا ہے۔

خیال رہے کہ شاگرد کے حملے میں استاد کے قتل اندوہناک واقعہ حال ہی میں جازان شہر کے ایک اسکول میں اس وقت پیش آیا تھا جب ایک سر پھرے طالب علم نے استاد محمد بن بکر بن آدم برناوی پر تیز دھارے آلے سے پے درپے وار کر کے انہیں قتل کردیا تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق خادم الحرمین الشریفین کی جانب سے وزارت خزانہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ مقتول استاد کے یتیم بچوں کے لیے مناسب مکان کا بندو بست کرے اور بچوں کی کفالت کے لیے پانچ لاکھ ریال کی امداد فوری فراہم کی جائے۔

درایں اثناء سعودی عرب کے وزیر تعلیم شہزادہ خالد الفیصل بن عبدالعزیز نے مقتول استاد کے لیے شاہ عبدالعزیز ایوارڈ کے اعلان پر شاہ عبداللہ کا شکریہ ادا کیا ہے۔ اپنے ایک بیان میں شہزادہ الفیصل کا کہنا تھا کہ مقتول استاد کے ساتھ ہمدردی کرتے ہوئے انہیں شاہ عبد العزیز ایوارڈ سے نوازنا استاد کے احترام کی عمدہ مثال ہے۔ انہوں نے مقتول استاد کی خدمات کو سراہا اور لواحقین کی ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی۔