لیبیا سے خام تیل لے جانیوالے کورین بحری جہاز پر امریکی قبضہ

جہاز کو نہ روک سکنے پر وزیر اعظم لیبیا کا اقتدار ختم ہوا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی بحریہ نے لیبیا کی بندرگاہ سے تیل بردار کورین بحری جہاز کو کھلے سمندروں میں کارروائی کر کے اپنے قبضے میں کر لیا ہے۔ کورین پرچم والا یہ بحری جہاز لیبیا کی حکومت کی مرضی کے بغیر بندرگاہ سے عسکریت پسندوں کی مدد سے ایک ہفتہ پہلے فرار ہوا تھا۔

اس تیل بردار بحری جہاز کا لیبیا کی حدود سے محفوظ نکل جانا وزیر اعظم علی زیدان کی سبکی کا باعث بنا تھا۔ اس کے بعد گیارہ مارچ کو وزیر اعظم علی زیدان کیخلاف عدم اعتماد کی قرارداد منظور ہو گئی کہ وہ ملکی مفادات کا تحفط کرنے اور عسکریت پسندوں پر کنٹرول کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

آج پیر کے روز پینٹاگان نے اعلان کیا ہے کہ عسکریت پسندوں کے کنٹرول میں مشرقی لیبیا کی بندرگاہ سے خام تیل لے کر نکلنے والے کورین جہاز کو قبضے میں لے لیا گیا ہے۔ اس آپریشن کے دوران کوئی زخمی ہوا ہے نہ کوئی جانی نقصان ہوا ہے۔ پینٹاگان کے مطابق یہ آپریشن دو ملکوں کی درخواست پر کیا گیا ہے۔

آپریشن کے نتیجے میں کمرشل ٹینکر مارننگ گلوری کا کنٹرول حاصل کر لیا گیا ہے۔ پینٹا گان کے ترجمان رئیر ایڈمرل کربی کے مطابق اس سے پہلے ایک سمندری کشتی کو اسی ماہ کے آغاز میں تین مسلح لیبی شہریوں سے قبضے میں لیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں