.

فلسطینی اتھارٹی، مغربی کنارے میں تیل کی تلاش کا منصوبہ

تیل کی تلاش کیلیے بین الاقوامی سطح سے پیش کشیں مطلوب ہیں: محمد مصطفی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی اتھارٹی نے مغربی کنارے میں تیل تلاش کرنے کے منصوبے کا اعلان کیا ہے، اسرائیل امن مذاکرات کے حوالے سے جاری غیر یقینی صورتحال میں مزید الجھاوے کا عنصر داخل کرنے کیلیے استعمال کر سکتا ہے۔

فلسطینی اتھارٹی کی طرف سے اعلان کیا گیا یہ منصوبہ اسرائیل کے محدود آئل فیلڈ سے متصل ہے۔ اتھارٹی کی طرف سے یہ کوشش ترقی، اور معاشی استحکام کے خواب کے ساتھ ساتھ مغربی کنارے میں آزادی کے حصول کی طرف ایک قدم ہو سکتا ہے۔

اسرائیل جو کہ علاقے پر مجموعی کنٹرول رکھتا ہے نے فی الحال اس منصوبے کے بارے میں یہ اعلان نہیں کیا ہے کہ اسے فلسطینی اتھارٹی کے اس منصوبے سے اتفاق ہے۔

فلسطینی اتھارٹی کے نائب وزیر اعظم محمد مصطفی کا کہنا ہے کہ ''اس مقصد کیلیے بین الاقوامی کمپنیوں کی طرف سے پیش کشیں مطلوب ہیں تاکہ مغربی کنارے میں تیل کی پیداوار کی راہ ہموار ہو سکے۔'' ان کا کہنا ہے کہ ''یہ منصوبہ مشرق وسطی کیلیے نمائندہ ٹونی بلئیر کی ان کوششوں کا حصہ ہے جن کا مقصد فلسطینی معیشت کو مضبوط کرنا ہے۔'' واضح رہے ٹونی بلئیر نے فلسطینی معیشت کی بہتری کیلیے کئی برسوں پر محیط منصوبہ پیش کیا ہے۔

اس طرح کی کوششوں کا مقصد امریکا کی مدد سے ہونے والے امن مذاکرات کو تقویت دینا ہے، تاہم ان منصوبوں میں رکاوٹ یہ ہے کہ جن علاقوں میں یہ تجویز کیے گئے ہیں مغربی کنارے کا ساٹھ فیصد حصہ اسرائیلی کنٹرول میں ہے۔ فلسطینیوں کا کہنا ہے کہ وہ ترقیاتی منصوبوں کے بغیر آزاد فلسطینی ریاست کی پائیداری نہیں دیکھتے ہیں۔