سیاسی پناہ لینے میں شامیوں کی افغانوں کو مات

روسی اتحادی کے شہریوں نے بے وطن ہونے میں امریکی اتحادی کو مات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام کے شہری سال 2013 کے دوران دنیا بھر کے صنعتی ممالک میں سیاسی پناہ لینے کے حوالے سے پہلے نمبر پر رہے۔ یہ تقابلی رپورٹ اقوام متحدہ کے پناہ گزینوں سے متعلق ادارے 44 صنعتی ملکوں کے حوالے سے جمعہ کے روز جاری کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق شام کا سب سے بڑا اتحادی روس اور طالبان کے خلاف امریکی جنگ میں شامل افغانستان بھی نمایاں ممالک میں شامل ہیں۔ تینوں ممالک کے لوگ امن ، اور رزق کی تلاش میں دوسرے ملکوں میں پناہ لینے کیلیے سب سے زیادہ مجبور ہیں ۔ ان ممالک سے تعلق رکھنے والے شہری بالعموم یورپ کا رخ کرتے ہیں۔

اقوام متحدہ کی مرتب کردہ اس رپورٹ میں 44 صنعتی ممالک اس حوالے سے مانیٹر کیے گئے۔ ان کے شہریوں کے دوسرے ملکوں میں جلاوطنی اختیار کرنے یا سیاسی پناہ لینے کے رجحانات کا جائزہ لیا گیا ہے۔ شام کی تین برسوں پر محیط خانہ جنگی کے باعث 2013 کے دوران شام کے 56351 شہریوں نے دوسرے ملکوں پناہ حاصل کرنے کی کوشش کی۔

یہ تعداد 2012 کی تعداد 25232 کے مقابلے میں دوگنا ہے۔ شام سے نقل مکانی کرنے والے شہریوں کی تعداد 26 لاکھ ہو چکی ہے جبکہ یہ سلسلہ خانہ جنگی کے چوتھے سال بھی رکتا نظر نہیں آتا ہے۔ شام کے بعد دوسرے نمبر پر شام کی بشار رجیم کا سب سے بڑا عالمی اتحادی اور سرپرست روس ہے۔ جس کے 39779 شہریوں نے دیگر ممالک میں پناہ لینے کی کوشش کی۔

پچھلے سال یہ تعداد 22650 تھی ۔ شام نے اس معاملے میں اففغانستان کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ پچھلے سال اس حوالے سے افغانستان سب ملکوں سے آگے تھا۔

اس عرصے کے دوران 44 ملکوں کے مجموعی طور پر 612700 افراد نے سیاسی پناہ کیلیے کوشش کی، جو ماضی کے مقابلے میں 28 فیصد زیادہ ہے۔ رپورٹ کے مطابق ایسے لوگوں کیلیے ترکی بہترین منزل ہے۔ پناہ گزینوں کے لیے تحفظ کے بین الاقوامی سے متعلقہ ڈائریکٹر والکر ترک نے روس کے شہریوں میں یہ جذبہ بہت زیادہ کہ وہ دوسری جگہوں پر پناہ لیں۔ اس ناطے یورپ کی 38 اقوام کو 2013 کے دوران سب سے زیادہ جلاوطنی اختیاروالوں کو دیکھنے کو موقع ملا ہے۔ ان میں جرمنی ، فرانس اور سویڈن زیادہ مقبول ملک ہیں۔ یورپی ممالک میں سیاسی پناہ کلیے آنے والے لوگوں میں 2012 کے مقابلے میں 32 فیصد اضافہ ہے۔ اس دوران جرمنی کو 109580 لوگوں کی درخواستیں موصول ہوئیں، فرانس 60100 ، سویڈن کو 54360، ترکی کو 44810، برطانیہ کو 29190، سوٹزر لینڈ کو 19440 اور ہنگری کو 18570 ، افراد کی سیاسی پناہ کیلیے درخواتیں موصول ہوئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں