.

بنگلہ دیشیوں پر مخالف ٹیموں کے پرچم لہرانے پر پابندی

ایشیا کپ کے میچوں کے دوران پاکستانی پرچم لہرانے کے بعد بی سی بی کا نیا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بنگلہ دیش کے حکام نے ٹی 20 عالمی کپ کرکٹ ٹورنا منٹ کے میچوں کے دوران اسٹیڈیمز میں مہمان ٹیموں کے قومی پرچم لہرانے والے اپنے شہریوں پر پابندی لگا دی ہے۔

بنگلہ دیش نے یہ فیصلہ حال ہی میں اختتام پذیر ہونے والے ایشیا کپ کرکٹ ٹورنا منٹ کے میچوں کے دوران پاکستان کا قومی پرچم لہرانے کے واقعات کے بعد کیا ہے۔اس وقت بنگلہ دیش ٹی 20 کرکٹ ٹورنا منٹ کی میزبانی کررہا ہے۔اس ٹورنا منٹ میں بنگلہ دیش کی تو کسی نمایاں کامیابی کا امکان نہیں لیکن پاکستان کی کرکٹ ٹیم نے آسٹریلیا کے خلاف شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور یہ توقع کی جارہی ہے کہ بنگلہ دیشی شائقین ایک مرتبہ پھر پاکستانی ٹیم کی خوب پذیرائی کریں گے جس کے پیش نظر حکام نے ان پر پابندی ہی عاید کردی ہے۔

قبل ازیں ایشیا کپ کے میچوں کے دوران بنگلہ دیشی شائقین کرکٹ نے پاکستان کی کرکٹ ٹیم کو بھرپور داد دی تھی اور وہ اس کے دوسری ٹیموں کے خلاف میچوں کے دوران پاکستان کا قومی پرچم لہراتے دیکھے گئے تھے اور پاکستانی ٹیم کی کارکردگی پر ان کا جوش وخروش دیدنی ہوتا تھا۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ؛''بورڈ نے مقامی شائقین کی جانب سے غیر ملکیوں کے پرچم لہرانے کے واقعات کا نوٹس لیا ہے۔کسی دوسرے ملک کا پرچم لہرانا اپنے ملک کے پرچم لہرانے کے اصولوں کے منافی ہے''۔

ترجمان نے فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ''ہمیں اس سلسلے میں ہدایات موصول ہوگئی ہے۔ہم نے سکیورٹی حکام اور محافظوں کو کہہ دیا ہے کہ وہ اس بات کویقین بنائیں کہ بنگلہ دیشی شائقین اسٹیڈیمز میں کسی دوسری قوم کا پرچم نہ لہرائیں''۔

بنگلہ دیش 1971ء سے قبل پاکستان کا حصہ تھا اور مشرقی پاکستان کہلاتا تھا لیکن بعد میں جنگ کے نتیجے میں پاکستان سے الگ ہوگیا۔اس ملک کی موجودہ حکمراں جماعت عوامی لیگ کی شروع دن سے پاکستان سے مخاصمت چلی آرہی ہے۔بی سی بی نے اپنے ملک کے چوالیسویں یوم آزادی کے موقع پر شاَئقین کرکٹ پر یہ پابندی لگائی ہے اور ایک طرح سے ان کے جذبات پر قدغنیں لگانے کی کوشش کی ہے۔