افغانستان: الیکشن کمیشن کی عمارت پر طالبان کی فائرنگ

حملہ آوروں نے ایک قریبی عمارت کو اپنا مورچہ بنا رکھا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں طالبان نے ہفتے کے روز الیکشن کمیشن کی عمارت پر اچانک فائرنگ شروع کر دی ہے۔ تاہم فوری طور پر کسی نقصان اور سکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی کے حوالے سے کوئی اطلاع سامنے نہیں آئی ہے۔

واضح رہے طالبان نے اگلے ماہ اپریل کی پانچ تاریخ کو افغانستان میں متوقع صدارتی انتخاب کو نشانہ بنانہ بنانے کا پہلے سے اعلان کر رکھا ہے۔ اس لحاظ سے جوں جوں انتخابی تاریخ قریب آ رہی ہے طالبان کی سرگرمیاں دارالحکومت کابل میں بھی شدت پکڑ رہی ہیں۔

ایک روز قبل طالبان نے غیر مکیوں کیلیے قائم ایک گیسٹ ہاوس کو نشانہ بنایا تھا جبکہ چند روز قبل کابل کے اہم ترین سرینا ہوٹل پر حملہ کیا گیا تھا۔ حملوں کی اس تازہ سیریز میں آج ہفتے کے روز الیکشن کمیشن کی عمارت اور اس کا عملہ نشانہ بنا ہے۔

کابل پولیس کے حکام کا کہنا ہے طالبان نے الیکشن کمیشن کی عمارت کے قریب ایک اور عمارت کو قبضے میں لے کر وہاں سے الیکشن کمیشن کی بلڈنگ پر فائرنگ شروع کی ہے۔ طالبان فائرنگ کیلیے خودکار ہتھیار استعمال کر رہے ہیں ۔

تاہم حملہ شروع ہونے کے ایک گھنٹہ بعد تک بھی یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے کہ حملہ آوروں کی تعداد کتنی ہے اور ان کے پاس کون کون سا مزید اسلحہ موجود ہے۔ آخری اطلاعات تک فائرنگ کا یہ سلسلہ جاری تھا۔ جبکہ سکیورٹی فورسز نے بھی پوزیشنیں سنبھال کر علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں