بانکی مون کیطرف سے پادری کی ہلاکت کی مذمت

شامی فریقین سے سویلین کا تحفظ یقینی بنانے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے شام میں جرمن پادری کی ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے اسے تشدد کا غیر انسانی واقعہ قرار دیا ہے۔ پچہتر سالہ فرانزوینڈر لگٹ کو پیر کے روز نامعلوم نقاب پوشوں نے ہلاک کر دیا تھا۔

سیکرٹری جنرل کے ترجمان کی طرف سے اس موقع پر جاری کیے گئے بیان میں ''جنگ کرنے والے فریقوں اور ان کے حامیوں سے مطالبہ کیا ہے کہ سویلین کی حفاظت کو مذہب ، طبقے، اور نسل کے امتیاز سے بالا تر ہو کر یقینی بنائیں۔'' واضح رہے عیسائی پادری کو ہلاک کرنے کے محرکات فوری طور پر سامنے نہیں آ سکے ہیں، تاہم بشار رجیم اور باغیوں نے اس مذہبی رہنما کی ہلاکت کی ذمہ داری ایک دوسرے پر ڈالی ہے۔

اقوام متحدہ کے سربراہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ '' فریقین کو لازما اس کا اہتمام کرنا چاہیے کہ وہ سویلین کے خلاف ایسے واقعات کو روکیں اور آبادیوں پر بمباری سے اجتناب کریں۔'' بان کی مون نے کساب کے علاقے کے حوالے سے سامنے آنے والی خوفناک تصاویر پر سخت وحشت محسوس کی۔

تاہم انہوں نے سوشل میڈیا پر آنے والی ان تصاویر کے مصدقہ ہونے کے بارے میں کچھ کہنے سے معذوری ظاہر کی ہے۔ انہوں نے اس پر تشویش ظاہر کی ہے کہ اقوام متحدہ کی جانب سے دہشت گرد قرار دی گئی تنظیمیں ابھی تک سول آبادیوں کو مظالم کا نشانہ بنا رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں