اسرائیل: جاسوسی کیلیے سیٹلائٹ خلا میں چھوڑ دیا

چار سال کے وقفے سے سیٹلائٹ کی کامیاب اڑان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل نے جاسوسی کے شعبے کو وسعت دینے کیلیے اپنے نئے فوجی سیٹلائٹ خلا میں چھوڑا ہے۔ اسرائیل نے چار سال کے وقفے کے بعد خلا کے اسی مدار میں سیٹلائٹ بھیجا ہے جس میں اس سے پہلے ایک سیاہ بھیج چکا ہے۔

اسرائیلی حکام نے اس بارے میں کہا ہے کہ قومی سیٹلائٹ پروگرام کا مقصد انٹیلیجنس کے دائرے اور صلاحیت کو موئثر اور وسیع بنانا ہے۔ یہ کوششیں ایرانی جوہری پروگرام اور پڑوسی عرب ملکوں میں ایران کے حامی عسکری گروپوں کے ہوتے ہوئے ضروری ہے.

اوفیک دس سیٹلائٹ جس کا عبرانی نام آفاق رکھا گیا ہے اسے اسرائیل کے ایک فضائی مستقر سے چھوڑا گیا ہے۔ اسرائیل کے مصنوعی سیاروں کی اوفیک سیریز کا یہ دسواں سیٹلائٹ ہے۔ اسرائیلی میڈیا کا کہنا ہے کہ سیٹلائٹ چھوڑے جانے والے اس سیارے کی اڑان کامیاب رہی ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل کو یقین ہے کہ ایران کی یورینیم کی افزودگی جوہری اسلحے کی تیاری کے قریب ہے۔ دوسری جانب ایران اس کی تردید کرتا ہے۔ جبکہ اسرائیل کے بارے میں یہ کھلا راز ہے کہ یہ مشرق وسطی میں تنہا جوہری طاقت ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں