.

اٹلی کے سابق وزیر اعظم کا ساتھی لبنان میں گرفتار

72 سالہ سیاسی رہنما کو مافیا کا حصہ قرار دیا گیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بیروت پولیس نے سابق وزیر اعظم اٹلی کے سیاسی اتحادی اور مفرور قرار دیے گئے ساتھی کو گرفتار کر لیا ہے۔ انہیں اسی ہفتے میں مفرور قرار دیا گیا تھا۔ پالیرمو کورٹ نے ایک روز قبل مافیائی سازش کے مقدمہ کی سماعت کے دوران مقدمے کا حتمی فیصلہ آنے سے پہلے انہیں مفرور قرار دیا۔

اب وہ لبنان پولیس کی حراست میں ہے۔ یہ بات روم میں وزیر داخلہ انجلینو الفانو نے ایک سیاسی ریلی کے موقع پر کہی ہے۔ اٹلی کی اپوزیشن جماعت اور پنج تارہ تحریک نے وزیر داخلہ کے استعفا کا مطالبہ کر رکھا ہے۔ کیونکہ اٹلی پولیس دیل اتری کی گرفتاری میں ناکام رہی تھی۔ بعد ازاں اس کے موبائل فون کو 3اپریل کو لبنان میں ٹریس کر لیا گیا تھا۔

گرفتاری کے بعد دیل اتری کے وکیل کا کہنا ہے کہ وہ ابھی تک اپنے موکل سے ملاقات نہیں کر سکے ہیں۔ امکان ہے زیر حراست لیے گئے اس سیاسی رہنما کو لبنانی وکلا کی مدد اور معاونت دستیاب ہو جائے گی۔ ایک سال پہلے پالیرمو اپیل کورٹ نے 72 سالہ دیل اتری کو ایک مافیا کے ساتھ تعلق کی بنیاد پر مجرم قرار دیا تھا۔

تاہم انہوں نے کسی بھی ایے غلط کام کے کرنے سے انکار کیا تھا۔ اٹلی کے قانون کے مطابق بوڑھے سیاستدان کو حتمی سزا ملنے سے پہلے تک گرفتار نہیں کیا گیا تھا، اسی دوران وہ فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے، تاہم لبنان سے انہیں گرفتار کر لیا گیا ہے۔