.

میں اسرائیل کی دیوانی ہوں: کارلا برونی

فرانس کی سابق خاتون اول کا عبرانی اخبار کو انٹرویو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کی سابق خاتون اول کارلا برونی کا کہنا ہے کہ وہ اسرائیل کی دیوانی ہیں۔ گذشتہ روز ایک اسرائیلی اخبار میں شائع ہونے والے اپنے انٹرویو میں ماضی کی فیشن ماڈل، گلوکارہ اور گیٹارسٹ کارلا برونی نے اپنے خاندان کے یہودی رابطوں کا بڑا ہی جذباتی انداز میں تذکرہ کیا۔

اسرائیل سے شائع ہونے والے عبرانی اخبار 'یدیعوت احرونوت' کو خصوصی انٹرویو میں کارلا برونی نے بتایا کہ وہ تل ابیب میں 25 مئی کو ہونے کنسرٹ میں اپنے شوہر اور سابق فرانسیسی صدر نیوکلا سرکوزی اور بیٹے اورلین کو بھی ہمراہ لائیں گی۔

اٹلی میں پیدا ہونے والی چھالیس سالہ برونی نے 'یدیعوت احرونوت' کو بتایا کہ ان کے والد یہودی تھے جبکہ ان کے شوہر سرکوزی کے دادا یہودی تھے۔ انہوں نے مزید انکشاف کیا کہ سرکوزی کا ایک پوتا بھی یہودی ہے کیونکہ سابق فرانسیسی صدر کے بیٹے سولال کی کروڑ پتی بیوی جیسیکا سیباون بھی یہودی مذہب کی پیروکار ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ سنہ 2001ء میں ان کی رافیل ایتھوین نامی فلاسفر سے ہم بستری کے نتیجے میں ان کا بیٹا ایرولین پیدا ہوا۔ میرے بیٹے کو عیسائی بنانے کے عمل سے گذارا گیا جبکہ اس کا والد یہودی مذہب کا پیروکار تھا۔ مجھے خوشی ہے کہ میں نے اپنے بیٹے ایرولین کو دونوں وارثت منتقل کیں۔

کارلا برونی نے بتایا کہ وہ ماضی میں دو مرتبہ اسرائیل کا دورہ کر چکی ہیں۔ ایک بار وہ فیشن ماڈل کے طور پر اسرائیل آئیں جبکہ دوسری مرتبہ اور فرانسیسی خاتون اول کے طور پر اپنے شوہر سرکوزی کے ہمراہ تل ابیب آئیں۔ "میں اسرائیل کی دیوانی ہوں، یہ جگہ زندگی سے بھرپور ہے۔"

"اگر میرے شوہر ساتھ آئے تو ہم اسرائیل میں زیادہ دنوں کے لئے قیام کرنا چاہیں گے۔ میں اپنے بیٹے کو بھی ساتھ لانا چاہتی ہوں تاکہ وہ اسرائیل کے بارے میں جان سکے۔"