اسلام مخالف جرمن سیاستدان کے بعد بیٹا بھی مسلمان ہوگیا

اسکندر امین والد کے مسلمان ہونے کے بعد قرآن کی طرف مائل ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

جرمن سیاست دان ارونڈ وین ڈرون مسلم دنیا کے لیے ایک جانا پہچانا نام ہے۔ وہ ماضی میں اسلام کا سخت ناقد رہا ہے اور اسلام مخالف پارٹی کا بھی رکن رہ چکا ہے۔ وہ 2008 میں اسلام مخالف فلم ''فتنہ'' کا تقسیم کار تھا۔ اس فلم کے نام فتنے نے مسلمانوں میں غم وغصہ پیدا کیا کہ اس فلم میں اسلام اور پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم کا تشخص مجروح کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔

فلم کے اجراء کے پانچ سال بعد ارونڈ نے پوری دنیا کو اس وقت حیران کر دیا جب وہ دائرہ اسلام میں داخل ہوگیا۔ اب وہ ایک تبدیل شدہ انسان ہے۔ اس نے اسلامی تعلیمات سے آگاہی کے بعد اسلام قبول کیا ہے۔ اسلامی تعلیمات کے گہرے مطالعے کے بعد ارونڈ اسلام کو امن کا دین قرار دیتا ہے۔

آج کل ارونڈ ایک مرتبہ پھر اخباری سرخیوں کا موضوع ہے کیونکہ اس کا بیٹا اسکندر امین بھی دائرہ اسلام میں داخل ہوگیا ہے۔ اسکندر امین نے دبئی میں منعقدہ ایک روح پرور تقریب میں حاضرین کے سامنے دائرہ اسلام میں داخل ہونے کا اعلان کیا۔

اسکندر امین نے کہا:'' میں شہادت دیتا ہوں کوئی عبادت کے لائق نہیں مگر اللہ اور محمد اللہ کے بندے اور رسول ہیں۔'' اسکندر امین نے اس موقع پر عقیدہ ختم نبوت پر ایمان کا بھی اعلان کیا۔

اسکندر امین نے اسلام کی طرف مائل ہونے کا ذکر ایک انٹرویو میں اس طرح کیا '' میں نے دیکھا میرا والد اسلام قبول کرنے کے بعد زیادہ پرامن اور پرسکون ہو گیا ہے، اس چیز نے میرے اندر یہ احساس پیدا کیا کہ اسلام میں ضرور ایسی کوئی اچھائی موجود ہے جو انسانوں کو بہتر بنا دیتی ہے۔''

اس کا کہنا تھا '' یہ دیکھتے ہوئے میں نے قرآن کا مطالعہ شروع کر دیا، علماء کے لیکچر سننے لگا جو میری اسلام کے بارے میں آگاہی کا ذریعہ بن گئے۔'' 22 سالہ اسکندر امین نے اسلام کی طرف مائل ہونے کی ایک وجہ اپنے ایک مسلم ہم جماعت کا بہتر اخلاق اور کردار بھی بتایا جس کو دیکھ کر اسکندر امین کو اندازہ ہوا کہ ایک مسلمان کس طرح کی زندگی گزارتا ہے۔

اسکندر امین کے والد کا اسلام مخالف فلم کے بارے میں اب کہنا ہے کہ فلم اس نے تیار نہیں کی تھی بلکہ اس کا کردار صرف فلم کی تقسیم سے متعلق تھا،'' میں سمجھتا ہوں یہ بھی میری غلطی تھی۔ اپنی اس غلطی پر مجھ دلی افسوس ہے۔''

اسکندر امین کے والد کا یہ بھی کہنا ہے کہ '' میرے اندر اپنی غلطیوں کی اصلاح کا جذبہ ہے تاکہ میں اپنے ماضی کا ازالہ کر سکوں، اب میں اپنی صلاحیتوں اور مہارتوں کو مثبت کاموں کے لیے استعمال کرنا چاہتا ہوں۔'' ارونڈ کا یہ بھی کہنا تھا '' میں اسلام کے حوالے سے ایک ایسی فلم بنانا چاہتا ہوں جس میں اسلام اور نبی آخرالزمان صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات کو اجاگر کیا جاسکے۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں