شمشیر عبداللہ فوجی مشقوں کی پُر وقار اختتامی تقریب

تقریب میں جنرل راحیل شریف سمیت کئی عرب رہ نما بھی شریک ہوئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سعودی عرب میں مسلح افواج کے تمام شعبوں پر مشتمل دو روزہ شمشیر عبداللہ جنگی مشقیں اختتام پذیر ہو گئیں۔ جنگی مشقوں کے اختتام پر ولی عہد اور نائب وزیر اعظم وزیر دفاع شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت ایک پُر وقار تقریب کا اہتمام کیا گیا۔

تقریب میں پاکستان کی مسلح افواج کے سربراہ جنرل راحیل شریف سمیت متعدد عرب ممالک سے تعلق رکھنے والے سیاسی و عسکری قائدین نے شرکت کی۔ جنرل راحیل شریف پیر کو ولی عہد کی خصوصی دعوت پر جنگی مشقیں دیکھنے سعودی عرب پہنچے تھے۔ دیگر مہمانوں میں بحرین کے فرمانروا حمد بن عیسیٰ آل خلیفہ، ابوظہبی کے ولی عہد الشیخ محمد بن زاہد آل النھیان، کویت کے نائب وزیر اعظم الشیخ خالد الجراح الصباح اور سلطنت عمان کے سیکرٹری جنرل محمد بن ناصر الراسبی شریک تھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دو روزتک جاری رہنے والی جنگی مشقوں میں سعودی عرب کی بَری، بحری افواج کے دستوں اور فضائیہ نے بھرپور حصہ لیا۔ جنگی مشقوں کے اختتام پر منعقدہ تقریب میں سعودی ولی عہد شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز نے مختلف ممالک سے خصوصی دعوت پر آئے معزز مہمانوں کا پُرتپاک استقبال کیا۔ مہمانوں کا خیر مقدم کرنے والوں میں ولی عہد کے علاوہ مشرقی سعودی عرب کے امیر شہزادہ جلوی بن عبدالعزیز بن مساعد، مسلح افواج کے سربراہ جنرل حسین بن عبداللہ القبیل، ڈپٹی آرمی چیف جنرل عبدالرحمان بن صالح اور دیگر عہدیدار شریک تھے۔

سعودی عرب کی مسلح افواج کے سربراہ جنر حسین بن عبداللہ القبیل نے تقریب میں استقبالی کلمات کہے، جس کے بعد ولی عہد شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز نے خود تمام معزز مہمانوں کا خصوصی دعوت پر آمد پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

اس موقع پر انہوں نے"شمشیر" جنگی مشقوں کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ مملکت کے تمام دفاعی اداروں نے ان جنگی مشقوں میں حصہ لیا اور اپنی پیشہ وارانہ صلاحیت کو ثابت کر دکھایا ہے۔ شہزادہ سلمان کا کہنا تھا کہ ملک کے جنوبی، شمالی اور مشرقی علاقوں میں بہ یک وقت جنگی مشقیں سعودی تاریخ کا اہم ترین واقعہ ہے۔

ان جنگی مشقوں میں مسلح افواج نے ثابت کیا ہے کہ وہ ہر قسم کے سیکیورٹی چینلجوں سے نمٹنے کے لیے تیار ہیں۔ انہوں نے مسلح افواج کے افسروں اور جوانوں کی پیشہ ورانہ کارکردگی پر انہیں خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ ملک کی سرحدوں اور مقدسات کے محافظ اداروں کے ہوتے ہوئے دنیا کی کوئی طاقت سعودی عرب کو میلی آنکھ سے نہیں دیکھ سکتی۔ ہماری مسلح افواج سعودی عرب کی طرف بڑھنے والے دشمن کے ہرہاتھ کو کاٹ دیں گے۔

اختتامی تقریب سے قبل مختلف ممالک سے آئے مہمانوں نے سعودی عرب کی مسلح افواج کی جنگی مشقوں کا بھی معائنہ کیا۔ صحراء کی سخت گرمی میں ہونے والی جنگی مشقوں میں فوجی دستوں نے اپنی پیشہ وارانہ مہارت سے حاضرین کو حیران کر دیا۔ بیرون ملک سے آئے تمام مہمانوں نے سعودی عرب کی فوج اور اس کی دفاعی صلاحیت کو سراہا۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے جنوب، مشرقی اور شمالی علاقوں میں دو روز تک جاری رہنے والی جنگی مشقوں میں پولیس اور وزارت دفاع سمیت تمام سیکیورٹی اداروں نے حصہ لیا۔ فوجی مشقوں کے دوران جنگی ہوائی اور بحری جہازوں، ہیلی کاپٹروں، ٹینکوں، میزائلوں اور میزائل شکن سسٹم کا بھرپور استعمال کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں