امریکی خاتون اوّل کا بھائی باسکٹ بال کی کوچنگ سے برطرف

''ریاست اوریگن کے ایتھلیٹک ڈائریکٹر کا طلبہ اور یونیورسٹی کے مفاد میں فیصلہ''

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی خاتون اوّل مشعل اوباما کے بھائی کریگ رابنسن کو ریاست اوریگن میں مردوں کے باسکٹ بال کوچ کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔

کریگ رابنسن اوریگن یونیورسٹی کی باسکٹ بال ٹیم کے کوچ کے طور پر کام کررہے تھے۔یہ ٹیم ان کی کوچنگ میں کوئی نمایاں کامیابی حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے اور گذشتہ سیزن میں اس کی ہار اور جیت کا تناسب برابر برابر رہا تھا۔

امریکی صدر براک اوباما کے برادر نسبتی کے اوریگن یونیورسٹی کے ساتھ کوچنگ کے معاہدے کی میعاد کے تین سال ابھی باقی ہیں لیکن توقع ہے کہ یونیورسٹی انھیں قبل از وقت فراغت پر چالیس لاکھ ڈالرز سے زیادہ کی رقم دے دے گی۔

کریگ رابنسن نے بڑی بلند توقعات کے ساتھ اس یونیورسٹی میں کوچنگ کا آغاز کیا تھا۔ان کی ٹیم نے 12-2011ء میں اکیس میچ جیتے تھے اور وہ بارہ ٹیموں میں پانچویں نمبر پر رہی تھی اور اس سال دسویں نمبر پر رہی ہے۔

ریاست اوریگن کے ایتھلیٹک ڈائریکٹر باب ڈی کارلوس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ''میں کوچ رابنسن اور ان کے خاندان کا اوریگن اسٹیٹ یونیورسٹی کے لیے خدمات پر شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں۔یہ ایک مشکل فیصلہ تھا لیکن مزید جائزے کے بعد میں اس بات میں یقین رکھتا ہوں کہ یہ فیصلہ ہمارے ایتھلیٹس طلبہ ،ہمارے باسکٹ بال پروگرام اور ہماری یونیورسٹی کے مفاد میں ہے''۔

رابنسن پرنسٹن میں کالج کی سطح پر باسکٹ بال کھیلتے رہے تھے۔ان کی مشہورعالم چھوٹی بہن مشعل نے بھی اسی کالج میں تعلیم حاصل کی تھی۔انھیں دومرتبہ سال کا آئیوی لیگ کھلاڑی قراردیا گیا تھا۔اس کے بعد وہ پرنسٹن کے اسسٹنٹ کوچ بل کارموڈی کے معاون کے طور پر کام کرتے رہے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں