امریکا: 34 سعودی طلبہ اور 40 سیاح ڈی پورٹ

لیپ ٹاپس میں چوری کا سافٹ وئیر استعمال کرنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے 34 سعودی طلبہ کو امریکی جامعات میں حصول تعلیم سے روکنے کے علاوہ 40 سعودی سیاحوں کا امریکا میں دوبارہ داخلے پر پابندی لگاتے ہوئے انہیں امریکا سے واپس بھجوا دیا ہے۔ ان افراد پر الزام ہے کہ ان کے لیپ ٹاپس پر بغیرلائسنس کے کچھ سافٹ وئیر بروئے کار تھے۔

سعودی عرب وزارت ثقافت و اطلاعات میں کاپی رائٹ کے شعبہ کے ڈائریکٹر رفیق الا وکائیلی کا کہنا ہے کہ اس واقعے کے بعد مذکورہ سعودی طلبہ نے دوسرے ملکوں کی جامعات میں داخلہ لے لیا ہے۔ ڈائریکٹر کے مطابق اس سے پہلے بھی تین سعودی طلبہ کو آسٹریلیا کی جامعات میں زیر تعلیم ہوتے ہوئے اسی صورت حال کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

سعودی ذمہ دار نے بتایا دو سال پہلے ایک امریکی یونیورسٹی نے اس الزام کے تحت ایک سعودی طالبہ کے لیپ ٹاپ کا معائنہ کیا تھا، تاہم اس طالبہ نے یونیورسٹی انتظامیہ کو متعلقہ سافٹ وئیر خریدنے کے بل پیش کر دیے، اس پر یونیورسٹی انتظامیہ مطمئن ہو گئی تھی۔

رفیق الاوکائیلی نے مزید کہا 2009 سے یورپی یونین اور امریکا سافٹ وئیرز کے چوری چھپے کے استعمال کو سختی سے روک رہے ہیں، تاکہ کاپی رائٹ ایکٹ کی پاسداری ہو سکے۔ اس لیے ہمارے تمام شہریوں کو بھی کاپی رائٹ کے قوانین کی پابندی کرنی چاہیے۔ اس سلسلے میں سعودی مملکت سافٹ وئیرز کی چوری روکنے کیلیے متعلقہ کمپنیوں کے ساتھ پورا تعاون کر رہی ہے

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں