امریکی وزیردفاع چَک ہیگل کی سعودی عرب آمد

خلیجی وزرائے دفاع سے سکیورٹی کے شعبے میں تعاون بڑھانے پر بات چیت کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیردفاع چَک ہیگل مشرق وسطیٰ کے خطے کے دورے کے پہلے مرحلے میں منگل کو سعودی عرب پہنچ گئے ہیں۔

مسٹر چَک ہیگل بدھ کو سعودی عہدے داروں سے شام کی صورت حال اور ایران کے جوہری تنازعے پر جاری مذاکرات کے حوالے سے بات چیت کریں گے۔وہ خلیج تعاون کونسل کے وزرائے دفاع سے بھی ملاقات کریں گے۔یہ 2008ء کے بعد اس نوعیت کا پہلا اجلاس ہوگا۔

ان کا گذشتہ ایک سال میں خطے کا یہ تیسرا دورہ ہے۔پینٹاگان کے پریس سیکریٹری رئیر ایڈمرل جان کربی نے گذشتہ ہفتے ایک بیان میں کہا تھا کہ اس دورے کا مقصد خطے میں امریکا کی علاقائی حکمت عملی کو آگے بڑھانا ہے۔

ترجمان کے بہ قول چَک ہیگل جی سی سی کے وزرائے دفاع کے ساتھ اجلاس میں مشرق وسطیٰ میں امریکا کے سکیورٹی وعدوں کو پورا کرنے اور ایران کو جوہری ہتھیاروں کے حصول سے باز رکھنے کے لیے ملک کی غیر متزلزل پالیسی کا اعادہ کریں گے۔اس اجلاس میں فضائی اور میزائل دفاع ،میری ٹائم سکیورٹی اور سائبر دفاع کے شعبوں میں تعاون کو مربوط پر بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

امریکی وزیردفاع سعودی عرب کے بعد اردن اور اسرائیل جائیں گے۔وہ اسرائیلی ہم منصب سے صہیونی ریاست کی راکٹ اور میزائل دفاعی صلاحیت کو بڑھانے کے لیے اقدامات پر تبادلہ خیال کریں گے۔

درایں اثناء سعودی عرب نے ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف کو دورے کی دعوت دی ہے۔سعودی وزیرخارجہ سعود الفیصل نے ایک نیوزکانفرنس میں بتایا ہے کہ انھوں نے اپنے ایرانی ہم منصب کو دورے کی دعوت دی تھی لیکن انھوں نے ابھی تک اس کا جواب نہیں دیا ہے۔تاہم انھوں نے یہ نہیں بتایا کہ انھوں نے کب ایرانی وزیرخارجہ کو دعوت نامہ بھیجا تھا۔البتہ ان کا کہنا تھا کہ وہ جب چاہیں دورے کے لیے آسکتے ہیں،ہم ان کے استقبال کے منتظر ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں