.

اصلاح پسند ایرانی رہنما حسین موسوی علیل ہو گئے

موسوی کی اسپتال سے لی گئی تصاویر منظر عام پر آ گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تین سال سے گھر پر نظر بند اصلاح پسند ایرانی رہ نما میر حسین موسوی کو خرابی صحت کی بناء پر اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ اسپتال سے ان کی تازہ تصاویر منظر عام پر آئی ہیں جن میں ان پر بیماری اور تھکاوٹ کے آثار واضح طور پر دکھائی دیتے ہیں۔

برطانوی اخبار "ڈیلی ٹیلی گراف" کے مطابق میر حسین موسوی کی تازہ تصاویر اسپتال سے ان کے اہل خانہ ذریعے غیر ملکی ذرائع ابلاغ تک پہنچی ہیں۔

موسوی کے اہل خانہ نے حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ دانستہ طور پر میر حسین موسوی کے ساتھ ظالمانہ سلوک روا رکھے ہوئے ہے۔ ان کی خرابی صحت کی بنیادی وجہ گھر پر ان کی جبری نظری ہے، جس کے باعث وہ مسلسل علیل ہیں اور دن بہ دن کمزور ہوتے جا رہے ہیں۔ اہل خانہ کا مزید کہنا ہے کہ موسوی عارضہ قلب میں مبتلا ہیں اور فوری طور پر ان کے دل کی سرجری کی ضرورت ہے۔

اصلاح پسندوں کے ترجمان ایک نیوز ویب پورٹل کی رپورٹ کے مطابق میر حسین موسوی کو دل میں تکلیف کے باعث گذشتہ بدھ کو گھر سے اسپتال منتقل کیا گیا تھا جس کے بعد وہ ابھی تک مسلسل اسپتال میں ہیں۔

خیال رہے کہ ایرانی حکومت نے سنہ 2011ء میں اصلاح پسند رہ نماؤں میر حسین موسوی، ان کی اہلیہ زھرا نورد اور ایک دوسرے لیڈر مہدی کروبی کو ان کے گھروں میں نظر بند کر دیا تھا۔

ایرانی حکومت کے ترجمان محمد باقر نوبخت نے حالیہ بیان میں کہا تھا کہ صدر ڈاکٹر حسن روحانی مہدی کروبی اور میر حسین موسوی کی جبری نظر بندی ختم کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔