.

شمالی افریقہ ابتر صورتحال، امریکی میرینز اٹلی پہنچ گئے

امریکی حکام لیبیا میں خرابی کو اٹلی کیلیے خطرہ سمجھتے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کسی بھی خطرناک صورتحال سے نمٹنے کیلیے امریکی میرینز کا دستہ اٹلی پہنچ گیا ہے۔ یہ دستہ لیبیا کی صورتحال کے پیش نظر حفظ ما تقدم کے طور پر بھجوایا ہے۔ امریکی حکام سمجھتے ہیں کہ لیبیا میں حالات کی خرابی اٹلی کیلیے خطرناک ہو سکتی ہے۔

امریکا کا 200 میرینز پر مشتمل یہ عبوری اور ہنگامی دستہ حال ہی میں بنائی گئی کرائسس ریسپانس فورس سے متعلق ہے۔ اس خصوصی فورس کی تشکیل لیبیا کے شہر بن غازی میں امریکی مشن پر ہونے والے حملے کے بعد کی گئی تھی۔

امریکی دفتر خارجہ نے لیبیا کی تشویشناک صورتحال کے پیش نظر اعلی حکام کو آگاہ کر دیا ہے تاہم فی الحال طرابلس کے سفارت خانے کو بند کرنے کا فیصلہ نہیں کیا ہے۔ امریکی انتظامیہ کے حکام کا اس بارے میں کہنا ہے '' ہم لیبیا کی بگڑتی صورت حال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔''

امریکا کی طرف سے اٹلی بھجوائے گئے دستے کے ساتھ چار '' ٹلٹ روٹر آسپرے طیارے'' اور دو کے سی 130 طیاروں کے ''ری فیولنگ ٹینکڑز'' بھی موجود ہیں۔ امریکی دستہ اٹلی میں امریکی بحری ہوائی اڈے سیگونیلا پہنچ گئے ہیں۔

پینٹاگان کے ترجمان کرنل سٹیون وارن کے مطابق ''یہ اقدامات شمالی افریقہ میں صورتحال کی ابتری کی وجہ سے کرنا پڑے ہیں۔'' خیال رہے اس دستے کیلیے سپین اور بعض دوسری جگہوں سے بھی میرین منگوائے گئے ہیں۔ دوسری جانب لیبیا معمر قذافی کی حکومت کے خاتمے اور قتل کے بعد مسلسل مسلح افراد کے ہاتھوں یرغمال بنا ہوا ہے۔